Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں (شمارہ 658)

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں

(شمارہ 658)

حضورﷺ نے حضرت عائشہ رضی اللہ عنہاکو تنبیہ فرمائی اور فرمایا: اے عائشہ! ٹھہراور نرمی اختیار کر، سختی اور فحش کلامی سے پرہیز کر کیونکہ اللہ تعالیٰ بدکلامی کو اور یہ کلام اختیار کرنے کو پسند نہیں فرماتا۔

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہانے عرض کیا :آپ ﷺ نے ان کی حرکتوں کی طرف توجہ نہیں فرمائی، آپﷺ نے فرمایا: ہاں مجھے پتہ ہے انہوں نے کیا کہا، میں نے بھی تو وعلیکم السلام نہیں کہا بلکہ صرف و علیکم کہہ کر جواب دیا۔ جو کچھ انہوں نے میرے لیے کہا وہ میں نے ان پر اُلٹ دیا ان کی بددعا میرے حق میں قبول نہ ہوگی اور میر ی بددعا ان کو لگ کر رہے گی مطلب یہ ہے کہ جو انہوں نے کہا وہ ان پر الٹ دیا گیااور مزید سخت کلامی اور بدکلامی کی ضرورت نہیں۔

اللہ تعالیٰ شانہ کو نرمی پسند ہے، سختی اور سخت کلامی اور فحش کلامی پسند نہیں ہے دیکھو اس حدیث میں حضوراقدسﷺ نے کیسی مبارک نصیحت فرمائی، یہودی جو دشمن خدا اور دشمن دین تھے ان کو جواب دینے میں بھی یہ پسند نہ فرمایا کہ سختی کی جائے اور بدکلامی اختیار کی جائے، جب دشمنوں کے ساتھ یہ معاملہ ہے تو آپس میں مسلمانوں کو سخت کلامی اور بدکلامی اختیار کرنے کی کہاں گنجائش ہو سکتی ہے۔

 حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ فرمایا حضور اقدسﷺ نے : مومن طعنہ زنی کرنے والا اور لعنت بکنے والا اور فحش باتیں کرنے والا اور بے حیا نہیں ہوتا۔( ترمذی)

مومن کی شان ہی دوسری ہے وہ تو نرم مزاج، نرم زبان ، میٹھے الفاظ والا ہوتا ہے، انتقام اور جواب میں کوئی لفظ نکل جائے تو وہ بھی اسی قدر ہوتا ہے جتنا دوسرے نے کہا ہے ہم سب اس سے سبق لیں اور اپنی زبان پر کنٹرول کریں۔

لعنت کرنے کی ممانعت

حضرت ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور اکرمﷺ ( ایک مرتبہ) عید یا بقر عید کے موقع پر عیدگاہ تشریف لے جارہے تھے ( راستہ میں) خواتین پر گزرہوا، آپﷺ نے ان کو خطاب کر کے فرمایا : اے عورتو! صدقہ کرو کیونکہ مجھے دوزخ میں زیادہ تعداد عورتوں ہی کی دکھائی گئی ہے، عورتوں نے سوال کیا یہ کس وجہ سے یارسو ل اللہ ؟ آپﷺ نے فرمایا: اس لیے کہ تم لعنت بہت کرتی ہو اور شوہر کی ناشکری کرتی ہو(پھر فرمایا) کہ میں نے عورت سے بڑھ کر کسی کو نہیں دیکھا کہ عقل اور دین کے اعتبار سے ناقص ہوتے ہوئے بہت ہوشیار مرد کی عقل کو ختم کردے، عورتوں نے عرض کیا: یا رسول اللہ! ہمارے دین اور عقل میں کیا نقصان ہے؟ آپﷺ نے فرمایا : کیا تمہیں معلوم نہیں ہے کہ عورت کی گواہی مرد کی آدھی گواہی کے برابر ہے؟عرض کیا: جی ہاں ایسا تو ہے۔ فرمایا: یہ اس کی عقل کی کمی( کے باعث) ہے پھر فرمایا: کیا یہ بات نہیں ہے جب عورت کو حیض آتا ہے تو( ان دنوں میں حسب حکم شرع) نہ نماز پڑھتی ہیں نہ روزہ رکھتی ہیں۔ عورتوں نے جواب دیا کہ ہاں ایسا تو ہے فرمایا: یہ اس کے دین کا نقصان ہے۔(مشکوٰۃ شریف ۱۳ از بخاری ومسلم)

یہ حدیث بہت سی نصیحتوں پر مشتمل ہے سب کی تشریح خوب غور سے پڑھیں۔

سرور دو عالمﷺ نے اولاً فرمایا کہ عورتو!صدقہ کرو، کیونکہ دوزخ میں زیادہ تر میں نے عورتوں کو دیکھا ہے اس سے معلوم ہوا کہ دوزخ میں زیادہ تعداد عورتوں ہی کی ہوگی جو انسان( مردو عورت) کافر یا مشرک یا منافق یا بے دین ہوں گے وہ ہمیشہ ہی دوزخ میں رہیں گے اور بہت سے مسلمان( مردو عورت) بھی اپنی اپنی بداعمالیوں کی وجہ سے دوزخ میں چلے جائیں گے، پھر جب خدا تعالیٰ کی مرضی ہوگی ان کو وہاں سے نکال کر جنت میں داخل فرمادیں گے، دوزخ میں داخل ہونے والوں میں زیادہ تر عورتیں ہوگی اور ان کے دوزخ میں جانے کی کئی وجہیں ہیں، عورتوں کا جو عام حال ہے، نمازوں کو قضا کرنا ،زیور کی زکوٰۃ نہ دینا اور بدگوئی و بدزبانی میں لگا رہنا، یہ سب بڑے بڑے گناہ ہیں، اللہ تعالیٰ معاف نہ کرے اور جن لوگوں کی برائیاں کرتی تھیں وہ معاف نہ کریں تو عذاب بھگتنا پڑے گا۔

اس حدیث میں ایک خاص عمل کی ترغیب دی گئی ہے یعنی صدقہ کرنا ،صدقہ کرنا دوزخ سے بچانے میں بہت دخل ہے ایک حدیث میں فرمایا ہے:

 اتقواالنارولوبشق تمرۃ(مشکوٰۃ)

یعنی صدقہ کرکے دوزخ سے بچو، اگر چہ آدھی کھجور ہی دے دو۔

اس میں فرض صدقہ یعنی زکوٰۃ اور نفلی صدقہ یعنی عام خیر خیرات سب داخل ہوگئے، ان سب کو دوزخ سے بچانے میں خاص دخل ہے جس قدر ہو سکے اللہ کی راہ میں مال خرچ کرو، اپنے مال میں توپورا اختیار ہے اور شوہر کا مال ہو تو اس سے اجازت لے کر خرچ کرو۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor