Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں (شمارہ 681)

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں

(شمارہ 681)

بدنظری سبب لعنت ہے

حضرت حسن بصریؒ نے فرمایا : مجھے یہ حدیث پہنچی ہے کہ رسول اللہﷺ نے ارشاد فرمایا:اللہ تعالیٰ کی لعنت ہو دیکھنے والے پر اور جس کی طرف دیکھا جائے اس پر بھی۔( مشکوٰۃ: ص ۲۷۰ازبیہقی فی شعب الایمان )

یہ حدیث بہت سی جزئیات پر حاوی ہے جس میںبطور قاعدئہ کلیہ کے ہر نظر حرام کومستحق لعنت بتایا اور نہ صرف دیکھنے والے پرلعنت بھیجی بلکہ اپنی خوشی اور اختیار سے جو کوئی بھی مرد وعورت کسی ایسی جگہ کھڑا ہوجہاں سے شریعت کے خلاف نظر ڈالی جا سکے یاکوئی بھی مرد عورت کے سامنے وہ حصہ کھول دے یا کھلا رہنے دے جس کادیکھنا سامنے والے کے لیے حلال نہ ہو تو یہ دکھانے والا بھی مستحق لعنت ہے۔

مزید تشریح یہ ہے کہ کوئی عورت بغیر پردہ کے بازار میں یا میلہ یا پارک میں چلی گئی، جس کی و جہ سے غیر مردوںنے اسے دیکھ لیا تو وہ مرد اورعورت اس لعنت کے مستحق ہوئے، اسی طرح کوئی عورت دروازہ سے یا کھڑکی سے یا برآمدہ سے باہر تاکتی جھانکتی ہے تو یہ عورت بد نظری کی وجہ سے مستحق لعنت ہے اور غیر مردوں کو دیکھنے کاموقع دینے سے بھی لعنت کی مستحق ہوئی،اسی طرح سے شادی کے موقع پر سلامی کے لیے جب دولہا اندر گھر میں آگیا اور نامحرم عورتوں کودیکھنے کا موقع دیا تو یہ دولہا عورتوں کے درمیان بیٹھنے کی وجہ سے اورعورتیں اس کودیکھنے کی وجہ سے لعنت کی مستحق ہوئیں،کسی عورت نے کسی عورت کو اگر ناف سے لے کر گھٹنوں کے ختم تک کا حصہ پورا یا کچھ دکھلادیا تو دیکھنے والی اور دکھانے والی دونوں لعنت کی مستحق ہوئیں، اسی طرح اگر کسی مرد نے کسی مرد کے سامنے ناف کے نیچے سے لے کر گھٹنوںکے ختم کا پورا حصہ کھول دیا تو دکھلانے والا اور دیکھنے والا دونوں لعنت کے مستحق ہوئے، کسی عورت نے اپنے محرم یعنی باپ بھائی وغیرہ کے سامنے اپنا پیٹ یا پیٹھ یا ران یا گھٹنا کھول دیا تو دیکھنے والا اور دکھانے والی دونوں نے لعنت کاکام کرلیا،بہت سے مغربیت زدہ گھرانوں میں یہ آفت ہے کہ انگریزعورتوں کی دیکھا دیکھی صرف ایک فراک پہنے ہوئے گھروں میں رہتی ہیں اور پائجامہ یا ساڑھی کی جگہ ذراسی لنگوٹی یاجانگیا پہنے رہتی ہیں جس کی وجہ سے رانیں اور گھٹنے گھر کے مردوں کے سامنے بلکہ نوکروں کے سامنے بھی(جن کوگھروں میں رکھنا حرام ہے) کھلے رہتے ہیں، اس طرح سے گھر کے سب مردو عورت مستحق لعنت ہوتے ہیں۔

 نامحرم مرد کے ساتھ تنہائی میں رہنے اور رات گزارنے کی ممانعت

حضرت عمر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ نے ارشاد فرمایا: کوئی مردجب کسی عورت کے ساتھ تنہائی میں ہوتا ہے تو ان دونوں کے علاوہ تیسرا فرد شیطان بھی ضرور موجود ہوتا ہے۔( مشکوٰۃ شریف :ص ۲۶۹از ترمذی)

شیطان کا کام معلوم ہی ہے کہ وہ گناہ کراتا ہے، جب بھی کوئی مرد غیر عورت کے ساتھ تنہائی میں ہوگا تو شیطان بھی وہاں موجود ہوگا،جودونوں کے جذبات کو اُبھارے گا اور دونوں کے دلوں میں خراب کام کرنے کے وسوسے ڈالے گا، اسی وجہ سے آنحضرتﷺنے سختی کے ساتھ غیر محرم کے پاس تنہائی میں رہنے کی ممانعت فرمائی، اس ممانعت پر بڑی سختی سے عمل کرنے کی ضرورت ہے، خواہ استاد ہو یاپیر ہو یا ماموں ،پھوپھی، چچا اور خالہ کا بیٹا ہو، ان کے پاس تنہائی میں رہنے سے عورت کوپرہیز کرنا لازم ہے اور مردوںکوبھی نامحرم عورتوں کے ساتھ تنہائی میںبیٹھنے اُٹھنے سے بچنے کا اہتمام کرنا ضروری ہے، نامحرم سے خلا ملا گناہ ہے۔

 حضرت جابر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اکرمﷺ نے ارشاد فرمایا: خبردار کوئی شخص ہرگز کسی بے شوہر والی عورت کے پاس رات نہ گزارے،الّایہ کہ ایساشخص ہوجس نے اس عورت سے نکاح کرلیا ہو یا اس کا محرم ہو۔( مشکوٰۃ: ص ۲۶۸ازمسلم)

اس حدیث پاک میں بہت سختی کے ساتھ اس چیز کی ممانعت کی گئی ہے کہ کوئی مرد اپنی بیوی یا محرم عورت کے علاوہ کسی غیر محرم کے پاس رات کو رہے ،یہ ممانعت بڑی دور اندیشی پر مبنی ہے اور اس میں بڑی مصلحت اور حکمت ہے۔ یوں تو ہر وقت ہی نامحرم مرد وعورت کا تنہائی میں رہنا منع ہے جیسا کہ ابھی ابھی گذشتہ حدیث میں گزرا، لیکن خصوصیت کے ساتھ کسی غیر محرم کے ساتھ رات کو رہنے کی ممانعت سختی کے ساتھ اس لیے فرمائی کہ رات کے اندھیرے اور یکسوئی میں گناہ کرنے کا موقع مل جانا آسان ہوتا ہے، اس ممانعت میں ہر نامحرم آگیا،جیٹھ،دیور، نندوئی ،چچازاد بھائی، ماموں اور پھوپھی کا لڑکا، یہ سب غیر محرم ہیں، عورتیں عموماًان کے پاس بے دریغ تنہائی میں چلی جاتی ہیں اور رات ہویا دن ان سے پردہ کرنے کا اہتمام نہیں کرتی ہیں۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor