Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں (شمارہ 619)

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں

(شمارہ 619)

حضرت ابو الدرداء رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اکرمﷺ نے فرمایا:

ابغوفی فی ضعفائکم فانما ترزقون اوتنصرون بضعفائکم

تم میری رضا مندی ضعیفوں( کی خدمت اورہمدردی اور دلداری) میں تلاش کرو، کیونکہ تم کو کمزوروں کی وجہ سے رزق ملتا ہے اور ان کی وجہ سے مدد ہوتی ہے۔( مشکوٰۃ)

جولوگ مالداری کے گھمنڈ میں غریبوں کو حقیر جانتے ہیں، کیسے غافل ہیں، یہ نہیں سمجھتے کہ ان کی وجہ سے ہم کو رزق مل رہا ہے، ضعیفوں کا وجود سبب ہے اور ان کی خدمت اللہ کی مدت اور نصرت کا ذریعہ ہے۔

 مومن کو رحمدل ہونا چاہئے، رحم مومن کی خاص صفت ہے، یوں تو بڑوں چھوٹوں اور برابر کے لوگوں اور انسانوں اور حیوانوں اور خدا کی ساری مخلوق پر رحم کرنا چاہئے لیکن ضعیفوں، مسکینوں،محتاجوں، یتیموں، بیوائوں، اپاہجوں پر خاص طور سے رحم کرنے کا خیال کرے، اللہ کا شکر ادا کرے کہ اس نے ہمیں ایسا بنایا ،اگر وہ چاہتا تو ہم کو ان جیسا اور ان کو ہمارے جیسا بنادیتا۔

 حضرت عبداللہ بن عمررضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور اقدسﷺ نے ارشاد فرمایا : رحم کرنے والوں پر رحمن رحم کرتا ہے ،تم ان پر رحم کرو جو زمین پر ہیں تم پر وہ رحم فرمائے گا جو آسمان میں( عظیم و کریم) ہے۔( ابودائود)

حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور اقدسﷺ نے فرمایا : ساری مخلوق اللہ کا کنبہ ہے( یعنی اللہ کے آل اولاد،بیوی بچے تو ہیں نہیں ،وہ تنہا اور یکتا ہے اس کا کسی سے کوئی رشتہ اور ناطہ نہیں، اس کی مخلوق ہی اس کا کنبہ ہے) پس اللہ کو سب سے زیادہ پیارا وہ ہے جو اس کے کنبہ کے ساتھ اچھا برتائو کرے۔( مشکوٰۃ)

اس سارے مضمون میں واقعی مسکینوں کا ذکر ہے جو پیشہ ور لوگ مانگتے پھرتے ہیں، عموماً مالدار ہوتے ہیں، یہا ں ان کا ذکر نہیں ہے اور مسکینوں کو قریب کرنے اور ان کے پاس بیٹھنے کا مطلب یہ نہیں کہ پردہ کا حکم ختم دیں بلکہ مردان مردوں کی خبر لیں جو مسکین ہوں اور عورتیں مسکین عورتوں کی خدمت کریں۔

 والدین اور دیگر رشتہ داروں کے ساتھ صلہ رحمی کرنے کا بیان، والدین کے ساتھ حسن سلوک درازیٔ عمر اور وسعت رزق کا سبب ہے

حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور اقدسﷺ نے فرمایا : جس کو یہ پسند ہوکہ اللہ تعالیٰ اس کی عمر دراز کرے اور اس کا رزق بڑھائے اس کو چاہیے کہ اپنے ماں باپ کے ساتھ حسن سلوک کرے اور دوسرے( رشتہ داروں کے ساتھ) صلہ رحمی کرے۔( درمنثور:ج۴ ص ۱۷۳ از بیہقی)

اس حدیث سے معلوم ہواکہ ماں باپ کے ساتھ حسن سلوک کرنے اور ان کی خدمت میں لگے رہنے سے عمر دراز ہوتی ہے اور رزق بڑھتا ہے بلکہ ماں باپ کے علاوہ دوسرے رشتہ داروں کے ساتھ صلہ رحمی کرنے سے بھی درازی عمر اور وسیع رزق نصیب ہوتا ہے، جو لوگ ماں باپ کی خدمت کی طرف توجہ نہیں کرتے ، آخرت کے ثواب سے تو محروم ہوتے ہی ہیں دنیا میں بھی نقصان اٹھاتے ہیں، ماں باپ کی فرمانبرداری اورخدمت گزاری اور دیگر رشتہ داروں کے ساتھ صلہ رحمی کرنے سے جو عمر میں درازی اور رزق میں وسعت ہوتی ان کو وہ نصیب نہیں ہوتی۔

حضرت ابو امامہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک شخص نے عرض کیا: یارسول اللہ! والدین کا اولاد پر کیا حق ہے؟آپﷺ نے اس کے جواب میں فرمایا: وہ دونوں تیری جنت اور تیری جہنم ہیں۔( مشکوٰۃ المصابیح: ص۴۲۱از ابن ماجہ)

اس حدیث سے ماں باپ کی خدمت اور ان کے ساتھ حسن سلوک کرنے کی فضیلت معلوم ہوئی، جب ایک شخص نے ماں باپ کے حقوق کے بارے میں سوال کیا تو حضور اقدسﷺ نے ارشاد فرمایا کہ ( مختصر طریقہ پر یہ سمجھ لے) کہ وہ دونوں تیری جنت اور تیری دوزخ ہیں، یعنی ان کے ساتھ حسن سلوک سے پیش آتے رہو اور ان کی خدمت کرتے رہو اور ان کی فرمانبرداری میں لگے رہو، تمہارا یہ عمل جنت میں جانے کا سبب بنے گا۔

 اور اگر تم نے ان کو ستایا، تکلیف دی ،نافرمانی کی، تو تمہارا یہ عمل دوزخ میں جانے کا سبب بنے گا، اس سے سمجھ لو کہ ان کا حق کس قدر ہے اور ان کے ساتھ کس طرح زندگی گزارنا چاہیے، قرآن مجید میں ماں باپ کے ساتھ حسن سلوک کرنے اور ان کی خدمت اور اکرام و احترام کے بارے میں ارشاد فرمایا ہے

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor