Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں (شمارہ 624)

خواتین اسلام سے رسول اکرمﷺ کی باتیں

(شمارہ 624)

ماں باپ کے علاوہ دوسرے رشتہ داروں کے ساتھ صلہ رحمی کا حکم

ترجمہ: حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور اکرمﷺ نے ارشاد فرمایا ہے کہ اپنے (خاندانی) نسبوں کو معلوم کرو جن (کے جاننے) سے تم اپنے عزیزوں کے ساتھ صلہ رحمی کرسکو گے، کیونکہ صلہ رحمی خاندان میں محبت کا ذریعہ بنتی ہے اور صلہ رحمی مال بڑھنے کا سبب ہے اور اس کی وجہ سے عمر زیادہ ہوتی ہے۔ (مشکوٰۃ المصابیح ص ۴۲۰، از ترمذی)

تشریح: اس حدیث پاک میں اول تو یہ حکم فرمایا کہ اپنے والدین کے خاندان کے نسبوں کو معلوم کرو، یعنی یہ جاننے کی کوشش کرو کہ رشتہ داری کی شاخیں کہاں کہاں تک ہیں اور کون کون شخص دور یا قریب کے واسطہ سے ہمارا کیا گیا ہے پھر اس شجرۂ نسب کے جاننے کی ضرورت بتائی اور وہ یہ کہ صلہ رحمی کا اسلام میں چونکہ بہت بڑا مرتبہ ہے، اور صلہ رحمی ہر رشتہ دار کے ساتھ درجہ بدرجہ اپنے مقدور کے مطابق کرنی چاہیے، اس لیے یہ جاننا ضروری ہے کہ کس سے کیا رشتہ ہے؟ اس کے بعد صلہ رحمی کے تین فائدے بتائے۔

اول: یہ کہ اس سے کنبہ اور خاندان میں محبت رہتی ہے، جب ہم رشتہ داروں کے یہاں آئیں، جائیں گے، ان کے دُکھ سکھ کے ساتھی ہونگے، روپے پیسے سے یا کسی اور طرح سے ان کی خدمت کریں گے، تو ظاہر ہے کہ ان کو ہم سے محبت ہوگی اور وہ بھی ایسے ہی برتائو کی فکر کریں گے، اگر ہر فرد  صلہ رحمی کرنے لگے، تو پورا خاندان حسد اور کینہ سے پاک ہوجائے اور سب راحت وسکون کے ساتھ زندگی گزاریں۔

دوم: یہ کہ صلہ رحمی کی وجہ سے مال بڑھتا  ہے۔

سوم: یہ کہ اس کی وجہ سے عمر بڑھتی ہے۔ ماںباپ کے ساتھ حسن سلوک کے فضائل میں بھی یہ دونوں باتیں گزر چکی ہیں اور دونوں بہت اہم ہیں۔

صلہ رحمی کی وجہ سے اللہ تعالیٰ راضی ہوتے ہیں (۱) اگر کوئی شخص اس کو اسلامی کام سمجھ کر انجام دے) اور دنیاوی فائدہ بھی پہنچتا ہے، اگر مال بڑھانا ہوتو اس کے لئے جہاں دوسری تدبیریں کرتے ہیں ان کے ساتھ اس کو بھی آزما کر دیکھیں، دوسری تدبیروں کے ذریعہ اللہ جل شانہ کی طرف سے اضافہ کا وعدہ نہیںاور صلہ رحمی اختیار کرنے پر اس کا وعدہ ہے، نیز عمر زیادہ ہونے کے لئے بھی صلہ رحمی نسخہ اکسیر ہے، اللہ جل شانہ کی طرف سے اس کا بھی وعدہ ہے۔

اچھے اعمال سے آخرت میں کامیابی اور برے اعمال سے آخرت میں ناکامی ایسا کھلا ہوا مسئلہ ہے جس کو سب ہی جانتے ہیں، لیکن نیک اعمال سے دنیا میں جو منافع اور فوائد ہوتے ہیں اور ان کے ذریعہ جو مصائب دور ہوتے ہیں اور برے اعمال کی وجہ سے جو موت سے پہلے آفات اور تکالیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے، بہت سے لوگ ان سے واقف نہیں، اگر واقف ہیں بھی تو اس کو اہمیت نہیں دیتے اور دنیاوی تدبیروں ہی کے لیے دوڑتے پھرتے ہیں اور چونکہ بداعمالی میں بھی مبتلا رہتے ہیں، اس لیے دنیاوی تدبیریں ناکام ہوتی ہیں، اور نہ صرف یہ کہ مصیبتیں دور نہیں ہوتیں بلکہ نئی نئی آفتیں اور مصیبتیں کھڑی ہوتی رہتی ہیں، پس جس طرح والدین کا ستانا اور قطع رحمی کرنا دنیا وآخرت کے وبال اور عذاب کا باعث ہے اسی طرح والدین اور دیگر رشتہ داروں کے ساتھ حسن سلوک اور صلہ رحمی کرنا بھی مال اور عمر بڑھنے کا ذریعہ ہے، جن اعمال کی جو خاصیت اللہ پاک نے رکھی ہے وہ اپنا رنگ ضرور لاتی ہے، اگرچہ صاحب اعمال مقبول بندہ بھی نہ ہو اور اس کے عمل کا آخرت میں ثواب بھی نہ مل سکے۔

حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ نبی اکرمﷺ نے فرمایا :خاندان کے لوگ جو آپس میں صلہ رحمی کرتے ہیں تو اللہ تعالیٰ ان پر رزق جاری فرماتے ہیں اور یہ لوگ رحمن کی حفاظت میں رہتے ہیں۔

اور حضرت عبدالرحمن بن عوف رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ حضور اکرمﷺنے ارشاد فرمایا : جن طاعات کا بدلہ جلد سے دیا جاتا ہے ان میں سب سے زیادہ جلدی بدلہ دلانے والا عمل صلہ رحمی ہے اور اس عمل کا یہ نفع یہاں تک کہ ایک خاندان کے لوگ فاجر یعنی بدکار ہوتے ہیں پھر بھی ان کے مالوں میں ترقی ہوتی رہتی ہے اور ان کے افراد کی تعداد بڑھتی رہتی ہے۔

(جاری ہے)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor