Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

عجائب قدرت۔ 483

عجائب قدرت

(شمارہ 483)

فجنکشت

یہ ایسی بڑی گھاس ہے کہ درخت سے مشابہ ہے ترائیوں میں اُگتی ہے اس کاپتازیتون کے پتے سے مشابہ ہوتا ہے اور اس میں پھول اورمیوہ ہوتا ہے مگرمیوہ کا استعمال نہیں کرتے ہیں ۔درد سر کو نافع ہے اور خوش خوابی لاتا ہے اور دودھ کی کثرت پیدا کرتا ہے اس کاپتا دافع زہر مارہے اور اس کا مرہم باؤلے کتے کی جرامت کو مفید ہے اس کے پتوں کا دھواں مچھر وغیرہ اس قسم کے نیش زن حشرات کو دفع کرتا ہے۔

 فوتنج

اس خوشبو دار گھاس کا پتا چھوٹا ہوتا ہے اور یہ دوقسم کی ہوتی ہے، نہری اور جبلی ۔نہری تو وہ ہے جو دریا کنارے جمے اس کی بو سے بیہوشی دور ہوتی ہے اور مانع احتلام ہے اور اس کا مرہم گزندہ حشرات کا نافع ہے اور اس کے پتوں کا دھواں بھی مفید ہے ،قاطع باہ ہے کیونکہ گردہ کو مضر ہے اور جبلی وہ جو پہاڑوں پر اُگے۔ اس کا غازہ کرنا بدن کا رنگ سرخ و سفید کرتا ہے خارش کو مفید ہے اور نیز جذام اور ہچکی اور شگاف بدن کو اور نیز مستسقی یعنی جلند ھر والے اور یرقان والے کو نافع ہے اور بچھو کے زہر کی بہت عمدہ دواہے۔

قاتل الذئب

اس کو کوٹ کر کچے گوشت پر چھڑک کر بھیڑئیے کو کھلادیں وہ فوراً مرجائے۔

قاتل الکلاب

 اس کے کھانے سے کتافوراً مر جاتا ہے کہتے ہیں کہ یہ گھاس ہندوستان میں ہوتی ہے جس کو کچلا کہتے ہیں۔

قتاد

 یہ ایک طرح کا خاردار درخت ہے جس میں گوندبکثرت ہوتا ہے اس کو شیرازی ابرکم کہتے ہیں اس کے کانٹوں کو جلا کر اس کی لکڑی گا ؤشتر کو کھلاتے ہیں اس کے کانٹے سخت اور درازہوتے ہیں حتی کہ اہل عرب سخت کاموں پر مثال دیتے ہیں کہ دونھا خرط القتاد یعنی اس کام سے درخت قتادہ کا کانٹا ہے، اس کی گوندکھانسی اور پھیپھڑے کے زخم کو نافع ہے۔

 ٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor