Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

طب نبویﷺ سے علاج ۔ 494

طب نبویﷺ سے علاج

(شمارہ 494)

آنحضورﷺ کا یہ حکم کس قدر خوبصورت جامع و مختصرہے اور اس کی علت کس قدر خوب ہے! اونٹنی کے دودھ میں رقت ہوتی ہے اور رسومت کم ہوتی ہے اور بہت زیادہ مسہل ہے۔ اور معدہ میں تجبن پیدا ہوتاہے۔ اونٹنی کا دودھ سدے کھولتا ہے اس لیے ضعف جگر کی وجہ سے ذرب کے مریضوں کے لیے نفع دیتا ہے۔

 آنحضورﷺ نے فرمایا:’’ اونٹنی کے دودھ اور پیشاب میں ذرب کے مریضوں کے لیے شفاء ہے۔‘‘ اس دودھ کی ایک خاصیت یہ ہے کہ چوہا اسے نہیں پیتا۔

 حضرت ابوہریرہؓ سے مرفوعاً مروی ہے کہ:’’ بنی اسرائیل کی ایک امت مفقود ہوگئی تھی مجھے اندیشہ ہے کہ وہ چوہے نہ ہوں اس لیے کہ جب اسے بھیڑبکریوں کا دودھ ملتا ہے تو اسے پی لیتے ہیں اور جب اونٹنی کا دودھ ملتا ہے تو اسے نہیں پیتے۔( بخاری ومسلم)

یہودی لوگ بھی اونٹ کا گوشت اور اس کادودھ استعمال نہیں کرتے ہیں۔

 ترش دودھ ، اپنی برودت اور یبوست کی بناء پر معدہ باردہ کے لیے مضر ہوتا ہے اور معدہ حارہ کے لیے مفید ہوتا ہے اور گرم مزاج والوں کے لیے محرک جماع ہے۔ کھیس اور پیولسی( بولی) بدن کو مرطوب اور شاداب رکھتی ہیں، یہ سریع الاستمالہ ہے۔ شہد اس کا مصلح ہے۔

 بھینس کے دودھ میں کچھ حرارت ہوتی ہے۔ بعض کاقول ہے کہ کیڑا اس کے قریب نہیں آتا یہ اس کے دودھ کی خاصیت ہے۔

لحم(گوشت،MEAT)

اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے:

وامدد ناھم بفا کھۃ ولحم (اور مدد دیںگے ہم ان کو میووں اور گوشت کے ساتھ)(الطور:۲۲)

حضرت بریدہ رضی اللہ عنہ سے مرفوعاً منقول ہے کہ:’’ دنیا و آخرت کا بہترین سالن گوشت ہے۔‘‘

 حضرت ابوالدرداء ؓ سے مرفوعاً مروی ہے کہ : ’’اہل دنیا اور اہل آخرت کے کھانوں کا سردار گوشت ہے۔‘‘

(جاری ہے)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor