Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

طب نبویﷺ سے علاج ۔ 572

طب نبویﷺ سے علاج

(شمارہ 572)

امام نسائی رحمہ اللہ نے بھی اس کو عمل الیوم و اللیلہ میں نقل کیا ہے۔ خلاصہ یہ ہے کہ کراہت اور عدم کراہت کا دار و مدار اس بات پر ہے کہ اگر کوئی شخص ان تعویذات وغیرہ کو مؤثر حقیقی خیال کرے کہ یہ چیزیں بذات خود نفع پہنچاتی ہیں یا نقصان دیتی ہیں یا ایسے الفاظ ہوں جن کے معنی و مفہوم نامعلوم ہوں، تو ممنوع ہوگا ورنہ نہیں۔

باقی رہا’’نشرہ‘‘ پانی پر ایک دم ہے جو کر کے آسمان کے نیچے رکھ چھوڑتے ہیں مریض اس سے اعضاء دھوتے ہیں۔ امام احمدرحمہ اللہ کہتے ہیں کہ حضرت ابن مسعود رضی اللہ عنہ اس کو مکروہ قراردیتے تھے۔

 امام ابودائودرحمہ اللہ نے مراسیل میں اپنی سند کے ساتھ نقل کیا ہے کہ میں نے حضرت حسن رضی اللہ عنہ سے نشرہ کے بارے میں پوچھا تو انہوں نے فرمایا کہ نبی کریمﷺ نے مجھے بتایا کہ’’نشرہ ایک شیطانی عمل ہے‘‘ حضرت جابر رضی اللہ عنہ سے بھی اسی قسم کی روایت منقول ہے۔

 ادویہ نبوی:

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ رسول اکرمﷺ نے مجھے دیکھا کہ میں پیٹ درد کے مارے بل کھا رہا ہوں تو پوچھا: پیٹ درد ہے؟میں نے کہا :’’جی ہاں‘‘اللہ کے رسول ! آپﷺ نے فرمایا:اُٹھو! اور نماز پڑھو، کیونکہ نماز میں شفاء ہے۔‘‘

علماء نے اس حدیث کے دوفائدے بیان کیے ہیں:

۱)حضور علیہ الصلوٰۃوالسلام نے فارسی لفظ( اشکم درد) استعمال فرمایا اور ا س میں گفتگو فرمائی۔

۲)نمازدل، معدہ اور آنتوں کے درد میں فائدہ مند ہوتی ہے۔

 اس کی تین وجوہات ہیں:

۱)نماز،عبادت ہونے کی وجہ سے ایک امر الہٰی ہے۔

۲)ایک امر نفسی ہے، اس لیے کہ نماز میں مشغول ہونے سے نفس کو درد کا احساس کم ہوگا تو قوت اس درد پر غالب رہے گی اور اس کی مدافعت میں لگی رہے گی۔

(جاری ہے)

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor