Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

طب نبویﷺ سے علاج ۔ 583

طب نبویﷺ سے علاج

(شمارہ 583)

نیز قریب الوفات مریض کے لیے مستحب ہے کہ وہ اپنے گھر والوں کو وصیت کر ے کہ وہ اس کی بیماری پر صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑیں اور اپنی مصیبت پربھی صبر کریں اور انہیں خوب وصیت کرے لیکن رونا دھونا نہیں ہونا چاہئے بلکہ ان سے کہے کہ رسول اللہﷺ کا ارشاد گرامی ہے کہ’’میت کو اس کے گھروالوں کے رونے دھونے سے عذاب دیا جاتا ہے‘‘

لہٰذا اے میرے پیارو! میرے لیے عذاب کا سبب نہ بنو، بلکہ مجھے اپنی دعائوں میں یادرکھو۔ اسی طرح انہیں وصیت کرے کہ اس کے جنازے میں بلندآواز سے کچھ پڑھنے سے اجتناب کریں۔

جب نزع کا عالم طاری ہونے لگے تو کثرت سے(لا الہ الا اللہ)کا ورد شروع کردے اور گھر والوں سے کہہ دے کہ اگر میں غافل ہوجائوں تو مجھے آگاہ کردینا۔

اس لیے کہ حضورﷺ کا ارشاد مبارک ہے:’’جس کا آخری کلام لا الہ الا اللہ ہوگا جنت میں داخل ہوگا۔‘‘ (ابودائود)

نیز فرمایا ہے کہ:’’اپنے قریب الموت کو لا الہ الا اللہ کی تلقین کیا کرو۔‘‘(مسلم)

اگرمریض بولنے سے عاجز آجائے تو حاضرین کو چاہیے کہ نرمی سے تلقین کردیں، کیونکہ اگر سختی سے تلقین کی گئی تو ڈر ہے کہ کہیں شدت تکلیف کے باعث کلمہ کورد نہ کردے۔

جب ایک بار کلمہ پڑھ لے تو اعادہ نہ کروائے، البتہ اگرکوئی اور بات( دنیا کی) کرلے تو کر سکتا ہے، تلقین کرنے والا شخص بھی( کسی گناہ میں) متہم نہ ہو تاکہ میت کو تکلیف نہ ہو۔

جب آنکھیں بند کرنے لگے تو یہ کہو:(بسم اللہ علی ملۃ رسول اللہ) ااور اس موقع پر خیر کے سوا کوئی اور بات نہ کرے۔ حضورﷺ نے فرمایا:’’جب تم میت کے پاس موجود ہو تو اچھی بات کہو، کیونکہ فرشتے تمہاری بات پر آمین کہتے ہیں۔‘‘

مروی ہے کہ انصار کا معمول تھا کہ وہ میت کے پاس سورۃ البقرہ کی تلاوت کرتے تھے ایک روایت میں یوں ہے کہ:اپنے مردوں پر سورۃ یٰس پڑھو۔( ابودائود)

(جاری ہے)

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor