Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

طب نبویﷺ سے علاج ۔ 601

طب نبویﷺ سے علاج

(شمارہ 601)

پھر اس جلد میں بال اور ناخن اُگا دئیے، کچھ بال تو زینت اور بچائو کے لیے بنائے جیسے سر کے بال اور پلکوں اور بھوئوںکے، اور سر کے بال تو زینت کے لیے ہیں اور پلکوں کے بال آنکھوں کی حفاظت اور بچائو کے لیے ہیں کہ کہیں کوئی چیز ان پر نہ آئے اور زینت بھی ہے اگر ہم ایک ایسے آدمی کا تصور کریں جو سر کے بالوں سے گنجا ہو اور اس کی آنکھوں اور پلکوں کے بال نہ ہوں تو وہ کیسا بد شکل اور بدہیئت دکھائی دے گا۔

 آپ دیکھ سکتے ہیں کہ قرندلی کس قدر بری شکل و ہیئت رکھتا ہے! یہ اللہ کی حکمت اور رحمت ہی کی تکمیل ہے کہ اس نے ابروئوں اور آنکھوں کے بالوں کو ایک جگہ رکا ہوا بنایا ہے کہ وہ لمبے نہیں ہونے پاتے، اس لیے کہ اگر یہ بال لمبے ہوجائیں تو آنکھوں پر لٹک جائیں اور آنکھوں کو نقصان پہنچائیں اور اگر اوپر کی جانب یا نیچے کی جانب اُگنے لگتے تو دیکھنے میں رکاوٹ پیدا ہوجاتی ۔ اس لیے کہ زائد بالوں کا ہونا آنکھوں کی امراض میں شامل ہے کیونکہ یہ بال آنکھوں کے لیے نقصان دہ ہوتے ہیںان کا علاج اُکھاڑنے سے کیا جاتا ہے۔

اور کچھ بال زینت کے لیے ہوتے ہیں جیسے ڈاڑھی کے بال کیونکہ ڈاڑھی انسان کو ہیبت اور وقار سے نوازتی ہے۔

 آپ دیکھ لیں کہ ڈاڑھی منڈے بڑھاپے میں کس قدر بدشکل ہوجاتے ہیں۔

 اس طرح کچھ بال نہ زینت کے لیے ہیں اور نہ کسی اور منفعت کے لیے جیسے بغلوں کے بال اور زیر ناف بال ۔اس لیے آنحضورﷺ نے ان کو اکھاڑنے اور مونڈڈالنے کا حکم دیا ہے۔ اس لیے کہ زیر ناف بال مونڈنے سے شہوت جماع بڑھتی ہے جیسا کہ سر کے پچھلے حصہ کے بال مونڈنا گردن کو مضبوط کرتا ہے۔

پھر اللہ کی اپنی مخلوق پر رحمت و لطف کا نظارہ دیکھئے کہ اس نے انگلیوں کے سروں پر ناخن پیدا کردئیے ہیں تاکہ انگلیوں کو حرکت میں قوت آئے اور انگلیوں کے سرے خراب نہ ہونے پائیں اور ناخنوں کو ایسا بنایا کہ وہ ہر وقت بڑھتے رہتے ہیں، اس لیے کہ اگر ناخن اپنی جگہ پر رکے رہیں اور نہ بڑھیں تو کاموں کی کثرت سے خراب ہونے لگیں، اس لیے حدیث پیغمبرﷺ میں ناخنوں کو تراشنے کا حکم آیا ہے۔

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor