Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

طب نبویﷺ سے علاج ۔ 603

طب نبویﷺ سے علاج

(شمارہ 603)

نوٹ:

(سماع کے بارے میں مستند علماء سے پوچھ کر عمل کیا جائے، اس مضمون کو دیکھ کر ازخود عمل کر نا نقصان دہ ہو سکتا ہے کیونکہ آج کے دور میں سماع کی حقیقت بدل چکی ہے۔ ساز اور ڈھول کا آجانا موسیقی بن جاتا ہے۔

حضرت عمر بن الخطاب رضی اللہ عنہ کے بارے میں منقول ہے کہ وہ ایک دن اپنے گھر میں گنگنا رہے تھے تو ان سے اس کے متعلق پوچھا گیا تو انہوں نے فرمایا کہ’’ ہم بھی عام لوگوں کی طرح خلوت میں گنگناتے ہیں۔‘‘ نیز فرمایا:’’ غنا، مسافر کا زاد راہ ہے۔‘‘

عبداللہ بن جعفر رضی اللہ عنہ سماع کے بڑے دلدادہ تھے۔

 امام زہری ؒ سے سماع کے بارے میں پوچھا گیا کہ آیا یہ مکروہ ہے؟انہوں نے فرمایا: جب بھدی آواز سے ہو تو مکروہ ہے اور اصل ممنوع امر سماع میں موجود لہو ولعب ہے۔

 جب ابن رواحہ رضی اللہ عنہ مدینہ کی گلی میں حدی خوانی کررہے تھے تو نبی کریمﷺ نے ان سے فرمایا:رفقا بالقواریر یعنی ان عورتوں کے ساتھ نرمی کا برتائو کرو، تاکہ تمہاری آواز سے کسی فتنہ میں نہ مبتلا ہوجائیں) ازمترجم

پھر الفاظ کے معانی کے سمجھنے سے فوائد سماع میں بھی اضافہ ہوتا ہے۔

 ارشاد بار ی تعالیٰ ہے:’’فبشر عبادی الذین یستمعون القول فیتبعون احسنہ‘‘(الزمر:۱۷۔۱۸)

’’سو آپ میرے ان بندوں کو خوشخبری سنادیں جو اس کلام الہٰی کو کان لگا کر سنتے پھر اس کی اچھی باتوں پر چلتے ہیں۔‘‘

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے مرفوعاً مروی ہے کہ: ’’اللہ تعالیٰ کسی چیز پر اتنی توجہ نہیں دیتے جتنی توجہ کسی پیغمبر پردیتے ہیں جب وہ بلند آواز سے خوش الحانی سے قرآن پڑھتا ہے۔‘‘

حضورﷺ نے فرمایا:’’قرآن کو اپنی آوازوں سے زینت دیا کرو۔‘‘

نیز اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے:

’’یزید فی الخلق مایشاء‘‘ (فاطر :۱)

’’وہ پیدائش میں جو چاہے زیادہ کردیتا ہے۔ ‘‘

(جاری ہے)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor