Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

الادب والادیب ۔ 604

الادب والادیب

(شمارہ 604)

ساغر ادھر بڑھا کہ جہادی شراب ہے

ساقی! مجھے پلا کہ جہادی شراب ہے

انگور کی شراب میں کیا ہوگا وہ نشہ

 جو اس میں ہے نشہ، کہ جہادی شراب ہے

 آنکھوں کو دے سرور، جگر کی بجھائے آگ

ہر دکھ کی ہے دوا کہ جہادی شراب ہے

زاہد کے اعتراض کی پرواہ کئے بغیر

مجھ کو پلاتا جا کہ جہادی شراب ہے

ساقی! اُلجھ نہ جانا حلال و حرام میں

 سب کو ہے یہ پتا کہ جہادی شراب ہے

دنیا کی مہوشوں کا تصور فضول ہے

 حوروں سے دل لگا کہ جہادی شراب ہے

 آجائیں جس سے ساغر و مینا بھی رقص میں

 مطرب وہ گیت گا کہ جہادی شراب ہے

(ہمشیرہ بابر آفریدی شہیدؒ)

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor