Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

بدمعاش قادیانی! (قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 456 - Naveed Masood Hashmi - Badmash Qadiyani

بدمعاش قادیانی!

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 456)

یہ بات اپنی جگہ ایک اٹل حقیقت ہے کہ اگر پولیس اخلاص نیت کے ساتھ بروقت اپنا کردار ادا کرنا شروع کر دے۔۔۔ تو پاکستان سے آدھی برائیاں اپنی موت آپ مر جائیں گی۔۔۔ پولیس،کہ قانون پر عملداری کروانا جس کے فرائض میں شامل ہے۔۔۔ جب روائتی غفلت، سستی یا جانبداری کا مظاہرہ کرنے پر آجائے۔۔۔ توپھر حالات وہی پیدا ہوں گے کہ جیسے حالات رمضان المبارک کی29ویں شب کو گوجرانوالہ میں پیدا ہوئے۔۔۔

گوجرانوالہ میں مقامی تھانے کے ایس ایچ او کی مجرمانہ غفلت کی وجہ سے مسلمانوں اور قادیانیوں میں تصادم ہوا۔۔۔ جس کی وجہ سے نہ صرف یہ کہ ایک خاتون سمیت2بچے ہلاک ہوئے بلکہ چار گھروں کو بھی نذر آتش کر دیا گیا۔۔۔ کہا جاتا ہے کہ مقامی قادیانیوں کی اشتعال انگیزی کے باوجود آگ میں گھرے ہوئے۔۔۔ پانچ سے زائد قادیانیوں کو محلے کے مسلمانوں نے اپنی جان پر کھیل کر آگ میں جلنے سے بچالیا۔۔۔ اور قادیانیوں کی جان بچاتے ہوئے ایک مقامی مسلمان خود بری طرح آگ کی لپیٹ میں آکر جھلس بھی گیا، میں سمجھتا ہوں کہ متعدد قادیانیوں کی جانوں کو آگ کے شعلوں سے بچانے والے مسلمانوں نے اقلیتوں کے حقوق کی ادائیگی کا حق ادا کر دیا۔۔۔ گوجرانوالہ کے جن مسلمان نوجوانوں نے آگ میں جلتے ہوئے قادیانیوں کو جانوں پر کھیل کر بچایا۔۔۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی ذمہ داری تھی۔۔۔ کہ ایسے قیمتی مسلمان نوجوانوں کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے عوام اور میڈیا کے سامنے آکر انہیں انعامات سے نوازتے۔۔۔ تاکہ بین الاقوامی سطح پر یہ پیغام جاتا کہ پاکستان کے مسلمان قادیانی اقلیت کی زیادتی کے باوجود انہیں آگ میں پھنسا ہوا دیکھ کر اپنی جانوں کو داؤ پر لگا کر انہیں بچانے سے دریغ نہیں کرتے۔۔۔ کاش! کہ قادیانی گروہ اس حقیقت کو سمجھ سکتا کہ علماء کرام اور مسلمان صرف دنیا کی آگ ہی نہیں بلکہ جہنم کی آگ سے انہیں بچانا چاہتے ہیں۔۔۔قادیانی گروہ اگر آئین پاکستان اورپاکستانی قوانین کی پابندی شروع کر دے۔۔۔اور آئین میں دی جانے والی اپنی اصل حیثیت تسلیم کر لے۔۔۔ تو کوئی وجہ نہیں کہ کہیں پر بھی فتنہ و فساد پیدا ہو۔۔۔

رمضان المبارک کی29ویں شب کو گوجرانوالہ کیا واقعہ پیش آیا تھا۔۔۔ اس کی اصل وجوہات کیا تھیں؟ آئیے متحدہ تحریک ختم نبوتﷺ رابطہ کمیٹی کیطرف سے میڈیاکو جاری کئے جانے والے بیان کو پڑھتے ہیں۔۔۔ یاد رہے کہ متحدہ تحریک ختم نبوت رابطہ کمیٹی میں چاروں مسالک یعنی دیوبندی، بریلوی، اہلحدیث اوراہل تشیع کے اکابرین شامل ہیں۔

متحدہ تحریک ختم نبوت رابطہ کمیٹی نے کہا ہے کہ قادیانیوں کی طرف سے فیس بک پر بیت اللہ شریف کی صریحاً توہین کے بعد گوجرانوالہ میں رونما ہونے والے فساد کی ذمہ داری قادیانی اور سرکاری حکام پر عائد ہوتی ہے۔۔۔ اس افسوسناک واقعہ کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کرائی جائے اور قادیانیوں کو قانون کاپابند بنایا جائے۔۔۔

تحریک ختم نبوت رابطہ کمیٹی کے جید علماء کرام نے کہا کہ رمضان المبارک کی29ویں شب کو گوجرانوالہ میں عاقب نامی ایک قادیانی ملعون نے صدام حسین نامی ایک مسلمان نوجوان کو فیس بک پر ایک گستاخانہ خاکہ بھیجا۔۔۔ جس میں بیت اللہ کی توہین کی گئی تھی۔۔۔ مسلمان نوجوان صدام حسین اپنے چند ساتھیوں کے ساتھ سابق قادیانی سہیل کی دوکان پر گئے اور انہیں صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ قادیانیوں کو سمجھائیں کہ وہ شعائر اسلامی کی توہین سے باز آجائیں۔۔ ابھی یہ گفتگو جاری ہی تھی کہ گستاخانہ خاکہ بنانے والا قادیانی عاقب اپنے دیگر غنڈوں کے ساتھ وہاں آن دھمکا۔۔۔ اور اس نے انتہائی اشتعال انگیز انداز میں نہ صرف یہ کہ بیت اللہ شریف کا گستاخانہ خاکہ بھیجنے کے عمل کو تسلیم کیا بلکہ مسلمان نوجوانوں سے بھی للکارتے ہوئے لہجے میں مخاطب ہو کر کہا کہ میں آئندہ بھی ایسا ہی کروں گا،بات پھر تو تکار پرہی ختم نہیں کی۔۔۔ بلکہ چھتوں پر چڑھے ہوئے قادیانیوں نے مسلمان نوجوانوں پر پتھر اور انیٹیں پھینکنا شروع کر دیں۔۔۔ کہا جاتا ہے کہ’’ملعون عاقب‘‘ نے اندھا دھند فائرنگ کر کے مقامی مسجد کے امام حاکم علی کے تیرہ سالہ صاحبزادے کو بھی زخمی کر دیا، علاقہ کے مظلوم مسلمان نوجوان صدام حسین کے ساتھ پیپلزکالونی کے تھانے میں پہنچے اور ایس ایچ او کو پوری صورتحال سے آگاہ کیا۔۔۔ لیکن مقامی ایس ایچ اونے  انتہائی غیر ذمہ داری اور ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے جان بوجھ کر کئی گھنٹے کی تاخیر کر ڈالی۔۔۔اور پھر پرچہ درج کرنے سے بھی انکار کر دیا، ملعون عاقب نامی قادیانی کی طرف سے توہین آمیز خاکہ، پھر قادیانیوں کی طرف سے چھتوں پر چڑھ کر۔۔۔ مسلمانوں پر اینٹوں اور پتھروں کی بارش، گستاخ عاقب ملعون کافائرنگ کر کے ایک مسلمان نوجوان کو زخمی کر دینا اور اس پر مستزادیہ کہ تھانے کے ایس ایچ او کا ان پورے واقعات پر خاموش تماشائی بنے رہنا۔۔۔ مسلمانوں میں اشتعال پید اکرنے کا سبب بنا،قادیانیوں کی دہشت گردی اور پولیس کی مجرمانہ غفلت سے مجبور ہو کر علاقہ بھر کے مسلمانوں نے قادیانیوں پر دھاوابول دیا۔۔۔ ہر چند کہ اس دھاوابولنے کی حمایت نہیں کی جا سکتی۔۔۔ لیکن کوئی انصاف پسند اس بات کا جواب دے کہ اگر پولیس چاہتی تو کیا حالات پر آغاز میں ہی قابو نہیں پایا جا سکتا تھا؟ ایک اسلامی نظریاتی ملک میں تمام اقلیتوں کومکمل اسلامی حقوق حاصل ہیں۔۔۔ لیکن کسی اقلیت کو یہ حق حاصل نہیں کہ وہ شعائر اسلامی کی توہین کرنے کے بعد معافی مانگنے کے بجائے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرے اور پھر مسلمانوں پر فائرنگ بھی کرے۔۔۔ اور علاقے میں کھلی بدمعاشی بھی کرتا پھرے، ختم نبوت رابطہ کمیٹی کے مولانا زاہد الراشدی کہتے ہیں کہ گوجرانوالہ کے حیدری روڈ پر قادیانیوں کے متعدد خاندان ایک عرصہ سے رہائش پذیر ہیں اور اپنی ارتدادی سرگرمیوں میں مصروف رہتے ہیں۔۔۔1992ء میں اسی محلہ میں ایک واقعہ پیش آیا کہ قادیانیوں نے اپنے مرکز میں ڈش لگا کرقادیانی ٹی وی کی نشریات کے ذریعے ارد گرد کے نوجوانوں کو ورغلانے کے سلسلہ شروع کردیا، اس پر علاقہ کے مسلمانوں نے احتجاج کیا توقادیانی اپنے 27افراد کو کینیڈا کی شہریت دلوانے میں کامیاب ہوگئے، یہ قادیانی جماعت کا طریقہ واردات ہے ۔۔۔ اپنے لوگوں کو کینیڈا،لندن اور دیگر یورپین ممالک میں شہریت دلوانے کیلئے وہ جان بوجھ کر اس قسم کے ڈرامے کر کے مسلمانوں کو مشتعل کرتے ہیں۔۔۔ اور پھر دوسرے ممالک میںسیاسی پناہ حاصل کرنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں، متحدہ تحریک ختم نبوت رابطہ کمیٹی کے کنوینئر عبدالطیف خالدچیمہ کے مطابق گوجرانوالہ کاواقعہ قادیانیوں کی غنڈا گردی اور پولیس کی مکمل نااہلی کی وجہ سے پیش آیا، انہوں نے کہا کہ پاکستان میں اقلیتیں تو بہت سی رہتی ہیں، مگر قادیانی اپنی سرگرمیاں اسلام کے نام سے شروع رکھے ہوئے ہیں۔۔۔

گوجرانوالہ کے واقعہ سے ملنے والا سبق یہ ہے کہ پولیس کا بروقت اورغیر جانبدارانہ کارروائی کرنا لازمی ہے، قادیانی جماعت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنی صفوں میں گھسے ہوئے ایسے مشتعل قادیانی نوجوانوں کو قانون کے حوالے کرے کہ جو کھلے عام شعائر اسلامی کی توہین کرتے ہیں۔۔۔ قادیانی جماعت محض کینیڈا یالندن کی شہریت حاصل کرنے کے لئے مسلمانوں کو اشتعال دلوانے والے قادیانیوں کا سختی سے محاسبہ کرے۔۔۔ اور پنجاب حکومت گوجرانوالہ کے واقعہ کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کر کے مجرموں کو قرار واقعی سزا دے۔۔۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor