Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

ہم سب محمدی ہیں! (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 479 - Naveed Masood Hashmi - Hum Sab Muhammadi Hein

ہم سب محمدی ہیں!

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 479)

نبیؐ کی عزت و حرمت پر مرنا عین ایماں ہے

سرِ مقتل بھی ان کا ذکر کرنا عین ایماں ہے

ڈراتا ہے ہمیں دار و رسن سے کیوں اے ناداں

نبیؐ کے عشق میں سولی پہ چڑھنا عین ایماں ہے

سب پڑھیں۔۔۔ﷺ، پھرپڑھیںﷺ۔۔۔ بار بار پڑھیںﷺ۔۔۔ کائنات کاذرہ ذرہ پڑھتا ہے۔۔۔ﷺ درختوں کے پتے پڑھتے ہیںﷺ۔۔۔ دریاؤں کا پانی، سمندر کی موجیں پڑھتی ہیںﷺ۔۔۔۔ سورج، چاند، ستارے پڑھتے ہیں۔۔۔۔ﷺ۔۔۔۔ نباتات، جمادات، چرند،پرند اورکائنات کی تمام مخلوقات پڑھتے ہیں۔۔۔ﷺ۔۔۔ خود خالق کائنات فرماتے ہیں کہ

ان اللّٰہ و ملئکتہ یصلون علی النبی

’’بے شک اللہ اور فرشتے پڑھتے ہیں درود نبی پر۔ اے ایمان والو!تم بھی نبی کریمﷺ پر درود پڑھا کرو‘‘۔۔۔

یعنی بقول محمد ولی رازی

ہر دم درود سرور عالمؐ کہا کروں

ہر لمحہ روئے مکرمؐ رہا کروں

اسم رسولؐ ہو گا مداوائے دردِ دل

صلّ علیٰ سے دل کے دکھوں کی دوا کروں

فرانس میں’’چارلی ایبڈو‘‘ نامی میگزین نے اللہ کے محبوب پیغمبرﷺ کے خلاف گستاخانہ خاکہ دوبارہ چھاپ کر صرف دنیا کے7ارب سے زائد انسانوں کی توہین ہی نہیں کی۔۔۔بلکہ اللہ کے عذاب کو بھی دعوت دی ہے۔۔۔ اس لئے کہ پیغمبرﷺ نہ صرف یہ کہ اللہ کے محبوب بلکہ پوری انسانیت کے محسن بھی ہیں۔۔۔ اور ’’چارلی ایبڈو‘‘ کی اس دہشتگردی پر فرانس کے صدر فرانسو اولاندے نے جو یہ کہا ہے کہ ’’چارلی ایبڈو اور اس کی اقدار زندہ رہیں گی، چارلی ایبڈو زندہ ہے اور زندہ رہے گا۔۔۔ آپ لوگوں کو قتل کر سکتے ہیں مگر ان کے تصورات نہیں مٹا سکتے ‘‘۔۔۔

کاش کہ فرانسیسی صدر نے یہ سب کہنے سے پہلے معروف برطانوی فلسفی جارج برناڈ شاہ کو بھی پڑھ لیتے۔۔۔

برناڈ شاہ لکھتا ہے کہ ’’میرا ایمان ہے کہ اگر آپﷺ جیسا شخص دنیا کا حکمران ہوتا تو اس دنیا کے تمام مسائل حل ہوچکے ہوتے۔۔۔ اور یہ دنیا خوشیوں اور امن کا گہوارہ بن جاتی۔۔۔ میں نے ہمیشہ آپﷺ کے مذہب کو حیران کن قوت اور صداقت کی وجہ سے اعلیٰ مقام دیاہے۔۔۔ میرے خیال میں آپﷺ کا مذہب دنیا کا واحد مذہب ہے جو ہر دور کے لائے ہوئے تقاضوں کے لئے کشش رکھتا ہے۔۔۔ میں نے اس حیران کن انسان کا بغور مطالعہ کیا ہے۔۔۔۔ بلاشبہ آپﷺ ہی انسانیت کے نجات دہندہ ہیں۔۔۔‘‘

انسانیت کے نجات دہندہ آقا و مولیٰﷺ کے توہین آمیز خاکے چھاپنے والے نہ کبھی زندہ تھے، نہ ہیں اور نہ ہی رہیں گے۔۔۔کیوں؟ اس لئے کہ گندگی کے ڈھیر پر پلنے والے کیڑے مکوڑے گندگی سے باہر نکلیں تو۔۔۔ مرجایا کرتے ہیں۔۔۔ آپﷺ کے گستاخ تو گندگی کے ڈھیروں پر پلنے والے کیڑے مکوڑوں اور کیچوؤں سے بھی بدتر ہوتے ہیں۔۔۔

نام اس کا زندہ رہتا ہے کہ جو نسلی ہو۔۔۔۔ جس کو اپنے باپ کا ہی علم نہ ہو۔۔۔ وہ یا اس کا نام کیسے زندہ رہ سکتا ہے؟ فرانس کے صدر کو کوئی بتائے کہ گزرے سوا چودہ سو سالوںمیں۔۔۔ جس بدبخت نے بھی۔۔۔ آقا ومولیٰﷺ کی گستاخی کی۔۔۔ اس کا نام نہ صرف مٹ کر رہ گیا۔۔۔ بلکہ کائنات میں بسنے والے انسانوں سمیت اللہ اور اس کے فرشتوں نے بھی اس پر۔۔۔ لعنت بھیجی۔۔۔۔

فرانسیسی صدر تحقیق کر کے بتائے کہ۔۔۔ ابوجہل، ابولہب، عتبہ، شیبہ اور امیہ بن خلف نام رکھنے والے دنیا میں کتنے لوگ باقی ہیں؟ جھوٹے مدعی نبوت، مسیلمہ کا آج چودہ سو سال بعد بھی کوئی ذکر کرتا ہے تو اس کے نام کے ساتھ کذاب کا اضافہ کر کے کرتا ہے۔۔۔

جعلی نبوت کے دعویداروں اسودعنسی پر کئی صدیوں بعد بھی لعنت بھیجی جاتی ہے۔۔۔ سو سال قبل ہندوستان کی سرزمین پر فرنگی سامراج نے جس مرزا غلام قادیانی سے نبوت کا دعویٰ کروایا تھا۔۔۔ اسے آج بھی روئے زمین پر بسنے والا ہر مسلمان، دجال، بے ایمان، لعنتی اور مرتد کہتا اور سمجھتا ہے۔۔۔۔ سوا چودہ سو سال میں جو جو گستاخ رسول بھی اٹھا۔۔۔ وہ دنیا و آخرت میں راندۂ درگاہ بن گیا۔۔۔

جس جس نے بھی آپﷺ کی گستاخی کی۔۔۔ اور جس جس نے بھی ان گستاخوں کی حمایت یا سرپرستی کی۔۔۔ وہ سب کے سب پھٹکارے ہوئے ذلیلوں کی طرح ہو گئے، فرانسیسی صدر کے کہنے کے مطابق۔۔۔ اگر’’چارلی ایبڈو‘‘ زندہ بھی رہا، تو ابوجہل، ابو لہب، مسیلمہ کذاب اور مرزا غلام احمد قادیانی کی طرح ذلت و خورای اور لعنت و پھٹکار کاطوق اس کے گلے میں لٹکتا رہے گا۔۔۔ دنیا کے سامنے کسی ایک گستاخ رسول کا نام پیش کیا جائے کہ اس نے دنیا میں عزت پائی ہو؟

کوئی ایک بھی نہیں۔۔۔ ’’چارلی ایبڈو‘‘ اور اس کی سرپرستی کرنے والے تو گستاخ ہیں اور عام سے گستاخ نہیں۔۔۔ بلکہ ساری طاقتوں اور قدرتوں کے مالک پروردگار عالم کے محبوب پیغمبرﷺ کے گستاخ ہیں۔۔۔ اگر کوئی بیٹا اپنے باپ کا گستاخ ہو، کوئی شاگرد اپنے استاد کا گستاخ ہو، کوئی مرید اپنے پیر کا گستاخ ہو، تووہ ذلیل ہو کررہ جاتا ہے۔۔۔ نبی اکرمﷺ کے گستاخ یا اس کے سرپرست کی بے غیرتی، بے شرمی، ذلت و گمراہی میں تو شک کرنا بھی کفر کے مترادف ہے۔۔۔

بے شک اللہ تعالیٰ تمام قدرتوں کے مالک ہیں۔۔۔ آسمانوں کو چھت اور زمین کو فرش بنانے والی ذات بھی اللہ تعالیٰ کی ہے۔۔۔ عام مسلمان کمزور ہیں اور مسلمان مملکتوں کے حکمران امریکہ اور یورپ کے بے دام غلام، لیکن کیا آقا و مولیٰﷺ کا کوئی گستاخ سمجھتا ہے کہ وہ آسمان کی چھت کے نیچے سے نکل کر۔۔۔ کسی اور دنیا میں جا بسے گا؟ ہر گز نہیں۔۔۔ اللہ اپنی قدرت کاملہ سے ہر گستاخِ پیغمبر کو ذلت و خواری کی موت دیکر قیامت تک کے انسانوں کے لئے نمونہ عبرت بنا دیا کرتا ہے۔۔۔

ہم تو اللہ کے پاک نبیﷺ کے غلام ہیں۔۔۔۔ ہم توآپﷺ کے عزت و حرمت پر کٹ مرنا عین ایمان سمجھتے ہیں۔۔۔ اگر کوئی گستاخ’’چارلی ایبڈو‘‘ کے ساتھ ہے تو۔۔۔ وہ سمجھ لے کہ اس نے شیطان کو خوش کرنے کیلئے۔۔۔ حماقتوں کے دریا میں غوطہ لگا لیا ہے۔۔۔ ہم تو محمد مصطفیٰﷺ کے غلام ہیں۔۔۔ اس لئے ایک بار پھر پڑھئے ۔۔۔ﷺ۔۔۔ جھوم کر پڑھئے۔۔۔ﷺ۔۔۔ درد مندی سے پڑھیے۔۔۔ﷺ۔۔۔

نبی اکرمؐ شفیع اعظمؐ دکھے دلوں کا سلام لے لو

تمام دنیا کے ہم ستائے کھڑے ہوئے ہیں پیام لے لو

شکستہ کشتی ہے تیز دھارا نظر سے روپوش ہے کنارا

نہیں کوئی ناخدا ہمارا، خبر تو عالی مقام لے لو

یہ کیسی منزل پہ آگئے ہیں نہ کوئی اپنا نہ ہم کسی کے

تم اپنے دامن میں آج آقاؐ تمام اپنے غلام لے لو

ہم تو آقا ومولیٰﷺ کے پروانے ہیں۔۔۔ ہم تو چارلی ایبڈو اور اس کی سرپرستی کیلئے۔۔۔ پیرس میں جمع ہونے والے چالیس بڑے چوروں پر۔۔۔ کروڑوں مرتبہ لعنت بھیجتے ہیں۔۔۔ شیطان صفت خرکاروں نے نعرہ لگایا کہ’’ہم سب چارلی ہیں‘‘‘ توبہ، توبہ ، ’’استغفراللہ‘‘۔۔۔ اگر تم سب چارلی ہو۔۔۔ توہم سب محمدیؐ ہیں۔۔۔ ہم سب مصطفویؐ ہیں۔۔۔

ہمارا جینا بھی مصطفی کریمﷺ کے لئے ہے۔۔ ہمارا مرنا بھی مصطفی کریمﷺ کیلئے ہے۔۔۔ ہمارے ماںباپ رسول مکرمﷺ کی خاک پر قربان،ہماری آل اولاد، رسول مدنیﷺ کی عزت و آبر پر قربان۔۔۔ ہمارا مال و متاع محسن اعظمﷺ کی حرمت پر فدا ہو۔۔۔

نامعلوم باپوں کی ناجائز اولاد چارلیو! تم دنیا کے بھوکے ہو۔۔۔ ہم آخرت کے طلب گار۔۔۔ تم دنیاوی زندگی کے حریص ہو۔۔۔ ہم شہادت کے عاشق۔۔۔۔ تم اگر محسن انسانیت ﷺ کی توہین سے باز نہ آئے۔۔۔ تو یہ دنیا دہکتا ہوا انگارہ بن جائے گی۔۔۔

بزدل، بدبخت اور کمینے چارلیو! تم اس اعلیٰ و ارفع نبیﷺ کی توہین کرتے ہو کہ جس نے’’ انسانیت‘‘ کو پہچان بخشی، انسانیت کو شرف عطا کیا۔۔۔ ’’انسانیت‘‘ کے سب سے بڑے محسن کی توہین کرنے والے۔۔۔ بدخصلت چارلیو!تم تو جانور ہو، بلکہ جانوروں سے بھی بدترہو۔۔۔

جو’’انسانیت‘‘ کی توہین کرے۔۔۔ وہ ’’انسان‘‘ نہیں بلکہ گدھوں سے بھی بدتر ہو جاتا ہے، ہمارا خیال تھا کہ صرف میگزین ’’چارلی ایبڈو‘‘ کا ایڈیٹر اور کارٹونسٹ ہی محسن انسانیتﷺ کا گستاخ بن کر۔۔۔ راندہ درگاہ ہوا۔۔۔ مگر جو کہتے ہیں کہ’’ہم سب چارلی‘‘ وہ سارے کے سارے۔۔۔ گندی نالی کے کیڑوں سے بھی زیادہ بدبودار نکلے۔۔۔

یورپ میں کیسے کیسے وحشی، گنوار، اُجڈ اور بدبخت پائے جاتے ہیں؟ یورپ میں کس طرح کے۔۔۔بدبودار جانور اپنے آپ کو مہذب ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہیں؟ سچی بات ہے یہ تو ہم نے کبھی سوچا ہی نہ تھا۔۔۔ یورپ کے غیر مہذب چارلیو!۔۔۔ آؤ ’’امن‘‘ کی طرف۔۔۔ آؤ انسانیت کی طرف، اور یہ امن اور انسانیت تمہیں ملے گی دامن مصطفیٰﷺ سے وابستہ ہو کر، دیکھو۔۔۔۔ جہنم کے راستوںسے بچ جاؤ۔۔۔ ہماری طرح۔۔۔ تمہارا، ایک ایک بال بھی محمدکریمﷺ کا مقروض ہے۔۔۔ اس لئے کہ یہ دنیا بنی ہی رسول کریمﷺ کی برکت سے ہے۔۔۔۔ اگرپیغمبرﷺ کو دنیا میں نہ آنا ہوتا تو۔۔۔ پروردگار دنیا ہی نہ بناتے۔۔۔ کم ظرف، نمک حرام اور بدبخت چارلیو! جس کے صدقے تم رزق کھاتے ہو، پھر اسی کی تم توہین بھی کرتے ہو۔۔؟

تف ہے تمہارے ان باپوں پر کہ۔۔۔ جن کی غلطیوں کی وجہ سے تمہیں یہ دن دیکھنا پڑے۔۔۔ لعنت ہے تمہارے گندے چہروں پر۔۔۔ پھٹکار پڑے تمہاری غلط سوچ پر۔۔۔

سرکار دوعالمﷺ کے غلامو، پروانواور مستانو!

آؤ مل کر پڑھیں

سلام اس پر کہ جس نے رحمت عالم لقب پایا

اسلام اس پر کہ جس نے ارفع و اعلیٰ نسب پایا

سلام اس پر کہ جس کا دو جہاں میں بول بالا ہے

سلام اس پر کہ جس کا گنبد خضریٰ نرالا ہے

سلام اس پر کہ جس نے عدل برتا دودھ پینے میں

سلام اس پر بھرا تھا نور جس کے سینے میں

سلام اس پر بسایا جس نے کعبے کو جبینوں میں

سلام اس پر حسیں تر ہے جو جہانوں کے حسینوں میں

سلام اس پر سجا ہے جس کے سر پر تاجِ سلطانی

سلام اس پر جسے زیبا ہے فخرِ اوجِ انسانی

ﷺ،ﷺ،ﷺ،ﷺ،ﷺ

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor