Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

جہنم مکانی مرزا غلام قادیانی (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 510 - Naveed Masood Hashmi - Jahannum Makani Mirza Qadiyani

جہنم مکانی مرزا غلام قادیانی

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 510)

کیا عالمی سطح پر … قادیانیوں کو … مسلمانوں کی صف میں دوبارہ شامل کروانے کیلئے کسی نئی سازش کا آغاز ہوچکا ہے؟ کیا امریکہ ‘ بھارت ‘ اسرائیل یا برطانیہ کے دبائو پر … کسی  مسلمان کو کافر یا کسی کافر کو مسلمان … قرار دیا جاسکتا ہے؟ ختم نبوت کا مسئلہ ہر سچے مسلمان اور عاشق رسول ﷺ کے لئے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے … یہ کوئی فروعی مسئلہ نہیں نہ ہی فرقوں کے اختلاف کی بات ہے … بلکہ مسئلہ ختم نبوت پر پوری امت مرمٹنے کی حد تک یقین  رکھتی ہے …  کیونکہ عقیدہ ختم نبوت اسلام کی اساس اور بنیاد ہے۔

اس میں کوئی شک نہیں کہ … مسلمانوں کی صفوں میں گھسے ہوئے … منافقین  ڈالروں‘ پائونڈز اور جھوٹے اسٹیٹس کے حصول کے لئے …7 ستمبر1974ء کے دن پاکستان کی قومی اسمبلی نے متفقہ طور پر … قادیانی مرزائیوں کو جو غیر مسلم اقلیت قراردیا تھا … اس فیصلے کو متنازعہ اور دبائو کے تحت … کیا جانے والا فیصلہ … مشہور کرکے … اس  فیصلے کو تبدیل کروانے … کے لئے سازشیں کر رہے ہیں۔

لیکن واجد شمس الحسن جیسے متنازعہ کردار کے حامل … لوگ اس بات کا جواب دیں کہ جب حضور اکرمﷺ کے حکم پر ’’اسودعنسی‘‘ کو جہنم رسید کیا گیا … تب تو نہ پاکستان تھا … اور نہ ہی اس کی قومی اسمبلی … اسود عنسی کا شمار بھی جھوٹے مدعیان نبوت میں ہوتا ہے۔

صرف یہی نہیں … مسیلمہ کذاب جیسے دجال نے  جب دعویٰ نبوت کیا تو حضرت سیدنا ابوبکر صدیقؓ نے … تمام تر مشکلات کے باوجود… مسیلمہ کذاب کے خلاف  اعلان جہادکرنے کے بعد… اس کی سرکوبی کے لئے … مجاہدصحابہ کرامؓ کا ایک لشکر روانہ  فرمایا … صحابہ کرامؓ  کے اس لشکر میں بدری صحابہؓ کے علاوہ مفسر ‘ محدث اور حفاظ صحابہ کرامؓ کی بھی بڑی تعداد شامل تھی۔

مرزا غلام قادیانی دجال کی طرح … مسیلمہ کذاب نے بھی … ہزاروں لوگوں کو گمراہ کرکے … تیس ہزار سے زائد تک کا مسلح لشکر تیار کر رکھا تھا … سیدنا صدیق اکبرؓ کو خلافت کا تخت سنبھالے ابھی چند روز ہی ہوئے تھے … ان پر نہ کوئی دبائو تھا اور نہ ہی … کوئی مطالبہ … لیکن اس کے باوجود حضرت سیدنا صدیق اکبرؓ نے … خلافت سنبھالنے کے بعد … پہلا کام جھوٹے مدعی نبوت مسیلمہ کذاب اور اس کے جھوٹے پیروکاروں کی سرکوبی کا کیا۔

کیوں؟ اس لئے کہ رسول کریمﷺ کے سچے ترین دوست حضرت ابوبکر صدیقؓ عقیدہ ختم نبوت کی … افضیلت اور اہمیت کو سمجھتے بھی تھے اور جانتے بھی … یہ کیا بات ہے کہ …  ملک مسلمانوں کا … اکثریت مسلمانوں کی … آئین اسلامی ‘نام اسلامی جمہوریہ پاکستان… اور پھر بھی یہاں پر … عقیدہ تحفظ ختم نبوت کے لئے تحریک چلانا پڑے؟

ہاں یہ اس وقت ہوتا ہے کہ جب … حکمرانوں ‘ سیاست دانوں اور دانشوران قوم کی عقلوں اور سماعتوںپر مہریں لگ چکی ہوں … پھر1953ء میں لاہور کی سڑکوں پر … دس ہزار سے زائد عشاق رسول کی لاشیں بھی گرتی ہیں۔

عقیدہ تحفظ ختم نبوت کے لئے … عشاق رسول کو جیلوں میں بھی جانا پڑتا ہے ‘ ہتھکڑیاں بھی پہننا پڑتی ہیں ‘ بیڑیاں بھی لگوانا پڑتی ہیں … مولانا عبید اللہ انور مرحوم کو لاہور کی سڑکوں پر … تشدد بھی سہنا پڑتا ہے … مولانا مودودیؒ مرحوم اور مولانا عبد الستار نیازیؒ مرحوم کو … پھانسی کے فیصلے بھی سننا پڑتے ہیں … امیر شریعت سید عطاء اللہ شاہ بخاریؒ کو اپنی آدھی زندگی جیل اور آدھی ریل میں گزارنا پڑتی ہے … کیا مولانا  شاہ احمد نورانی ؒ ‘ مولانا عبد الستار خان نیازیؒ‘ مولانا مفتی محمودؒ ‘ مولانا محمد شریف جالندھریؒ‘ سید ابو معاویہ ابو ذر بخاریؒ اور آغا شورش کاشمیریؒ نے 9 جون1974 ء کو مولانا سید یوسف بنوریؒ کی قیادت میں جس مجلس تحفظ ختم نبوت کی بنیاد رکھی تھی … وہ کسی دبائو یا پریشر کا نتیجہ تھا؟ نہیں خدا کی قسم نہیں … یہ سب شخصیات اپنے ایمان کے ہاتھوں مجبور تھیں اور انہوںنے اپنے ایمان کے ساتھ ساتھ … عام مسلمانوں کے ایمانوں کو قادیانی فتنے سے بچانے کے لئے…تحفظ ختم نبوت کیلئے …اپنی زندگیاں کھپا ڈالیں

7 ستمبر1974ء کے دن … قومی اسمبلی نے متفقہ طور پر … قادیانی مرزائیوں کو مسلسل غور و خوض اور بحث و تمحیث کے بعد … جب غیر مسلم اقلیت  قرار دیا … تب وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو مرحوم تھے … فرنگی سامراج کے خودکاشتہ پودے امریکہ اور اسرائیل کے منظور نظر قادیانیوں کو غیر مسلم اقلیت قرار دینے کا فیصلہ … کوئی آسان نہ تھا … اس فیصلے کا مطلب پوری ہندو ‘ یہودی اور عیسائی دنیا کی دشمنی اور مخالفت مول لینا تھا۔

اس لئے کہ قادیانی خود کچھ نہیں … بلکہ قادیانیت کے روپ میں دراصل یہود و ہنود پنپتے ہیں … مگر ذوالفقار علی بھٹو نے یہ سب کچھ جانتے بوجھتے ہوئے بھی …7 ستمبر1974 ء کو قادیانیوں کو غیر مسلم اقلیت قراردینے کا تاریخی کیا۔ اس فیصلے کے بعد بھٹو مرحوم نے مجلس تحفظ ختم نبوت کے قائد حضرت مولانا یوسف بنوریؒ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’’قادیانیوں کو غیر مسلم اقلیت قرار دینے کا فیصلہ ان کے گلے میں پھانسی کا پھندا ہے‘‘… تاریخی حوالے ہمیں یہ بھی بتاتے ہیں کہ ’’ایک دن جیل میں ملاقات کے دوران جناب بھٹو نے اپنی اہلیہ سے مخاطب ہوکر … کہا تھا کہ ’’نصرت! تم جانتی ہو کہ میں کسی فرقہ واریت کا قائل نہیں … لیکن قادیانی مجھے قتل کرنے کے درپے ہیں‘‘ اور پھر خود کلامی کے انداز میں کہا کہ I can sacrific my thousand lives for the sake of holy prophetc (peace bee upon him)

’’نبی اقدسﷺ کے لئے اپنی ہزاروں زندگیاں قربان کرسکتا ہوں۔‘‘

بھٹو مرحوم کے یہ الفاظ بتا رہے ہیں کہ … لغزشوں ‘ کمیوں ‘ کوتاہیوں اور بشری کمزوریوں کے باوجود … بھٹو سچے عاشق رسول تھے … امریکی یہودیوں کی ایجنٹی کرتے ہوئے … جو خناس عناصر7 ستمبر1974ء کے فیصلے کو متنازعہ بنانا چاہتے ہیں … وہ ذرا قوم کواس بات کا جواب دیں کہ شاعر مشرق علامہ محمد اقبالؒ نے جو یہ لکھا تھا کہ ’’قادیانیت کا سب سے بڑا دھوکایہ ہوگا کہ ایک غیر مسلم اس کو اسلام سمجھ کر قبول کررہا ہوگا … المیہ یہ ہوگا کہ وہ بیچارہ ایک کفر سے نکل کر دوسرے کفر میں جارہا ہوگا۔‘‘

کیا یہ بھی کسی دبائو کا نتیجہ تھا؟ ولی کامل حضرت پیر مہر علی شاہ گولڑہ شریف نے مرزا غلام قادیانی لعنتی دجال کو چیلنج کرتے ہوئے فرمایا تھا کہ ’’حسب وعدہ شاہی مسجد میں آئو ہم دونوں اس کے مینار پر چڑھ کر چھلانگ لگاتے ہیں … جو سچا ہوگا بچ جائے گا … اور جو جھوٹا ہوگا مر جائے گا…‘‘ جھوٹ کے چونکہ پائوں نہیں ہوتے … اس لئے قادیانی دجال نے راہ فرار اختیار کرنے میں ہی عافیت جانی … کیا یہ بھی کسی دبائو کا نتیجہ تھا؟

ننگ دیں واجد شمس الحسن جیسے قادیانی ایجنٹوں  سے کوئی پوچھے کہ کیا1899-90 میں حضرت پیر مہر علی شاہ ؒ گولڑوی نے ’’شمس الہدایہ‘‘ لکھ کر قادیانیت کے تابوت میں جو کیلیں گاڑی تھیں … وہ بھی کسی دبائو کا نتیجہ تھا؟

سیکولر لادینیت سے وابستہ … ملحدین کا مخصوص گروہ … ڈالر اور پائونڈز ضرور کھائے … لیکن  قادیانیوں کی اس قدر ایجنٹی  نہ کرے … کہ اصل حقائق سے ہی منکر ہو جائے … فتنہ قادیانیت … فتنہ مسیلمہ کذاب کا چربہ ہے … قادیانیوں سے کسی بھی مسلمان کی کوئی ذاتی دشمنی یا مخالفت نہیں … انہیں آئین پاکستان کے اندر دیئے گئے حقوق کی پاسداری کرنی چاہیے … جو شخص یا گروہ … آئین پاکستان میں دیئے جانے والے حقوق سے ہٹ کر قادیانیوں سے سلوک کرے گا یا قادیانیوں کو مسلم فرقہ تسلیم کرے گا … وہ آئین پاکستان سے باغی ہوکر قانون کا مجرم بن جائے گا۔

قانون کے ایسے مجرموں کے خلاف بھی … نیشنل ایکشن پلان کے تحت کارروائی ہونی چاہیے ‘تمام مسالک کے علماء کرام کی اولین ذمہ داری ہے کہ … وہ آپس کے فروغی اختلافات کو پس پشت ڈال کر … عوام کو فتنہ قادیانیت کے حوالے سے اعتماد میں لیں۔

صرف مسلمانوں کو ہی نہیں … بلکہ عیسائیوں سمیت دیگر اقلیتی برادریوں کے … قائدین کو بھی … اور انہیں بتائیں کہ قادیانیوں کے تمام حقوق کے ضامن مسلمان ہیں … مسلمان قادیانیوں کی جانوں کے نہیں …بلکہ ان کی طرف سے ختم نبوت کے عقیدے پر مارے جانے والے  ڈاکے کے مخالف ہیں … اس لئے قادیانیوں کو آئین کا پابند بنایا جائے۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor