Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

عظیم جہادی دھارا (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 565 - Naveed Masood Hashmi - Azeem  Jihadi Dhara

عظیم جہادی دھارا

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 565)

’’نیند‘‘ میں ڈوبتے ہی یوں محسوس ہوا کہ جیسے میرے ذہن کے دریچے روشن ہوتے جارہے ہیں۔۔۔ اور پھرروشنی کے اس ہالے میں۔۔۔ میری ملاقات ایک پرانے جہادی سے ہو گئی۔۔۔ سر پر جالی دار ٹوپی اور نورانی پیشانی والے پرانے جہادی نے مسکراتے ہوئے مجھ سے ہاتھ ملایا۔۔۔ اور پوچھا کہ ہاشمی بھائی! آپ نے مجھے پہچانا؟ میں کہ جو سی،ٹی ، ڈی اور’’شریف‘‘ برادران فورس کے چھاپوں سے ڈرا ہوا تھا۔۔۔ سہمے ہوئے انداز میں نفی میں گردن ہلا دی

وہ کھلکھلا کر ہنس پڑا، اور کہا آپ بھی، ہاشمی صاحب آپ بھی ڈرکر، مجھے پہچاننے سے انکار کر رہے ہیں، میں بڑا پرانا’’جہادی‘‘ ہوں۔۔۔ اور آپ سے چند سوالات کرنے آیا ہوں۔۔۔ میں نے کَن انکھیوں سے دائیں بائیں دیکھتے ہوئے کہا کہ۔۔۔ پورے ملک میں ایک میں ہی تمہیں ملا ہوں، کیوں مجھے مروانے پر تلے ہوئے ہو؟ اب اس نے باقاعدہ قہقہے لگاتے ہوئے کہا کہ’’حضرت‘‘ ڈریں مت۔۔۔ یہ تو سارا خواب کا منظر نامہ ہے۔۔۔ اچھا جی میں نے خوش ہوتے ہوئے کہا پھر پوچھو کیا پوچھنا چاہتے ہو؟

آج کل جہادیوں کیلئے ’’قومی دھارے‘‘ اور’’سیاسی دھارے‘‘ کی بڑی باتیں ہو رہی ہیں۔۔۔ آخر یہ کون سی ذات شریف ہیں؟ اس سے آخر مراد کیا ہے؟ کیا کچھ لوگ’’جہادیوں‘‘ کی چار، چار شادیاں تو نہیں کروانا چاہتے؟ جہادیوں کو کہیں یہ ترغیب تو نہیں دینا چاہتے کہ وہ بھی قومی خزانے میں لوٹ مار کر کے صرف پاکستان ہی نہیں بلکہ لندن اور امریکہ میں بھی فلیٹس اور سرے محل خرید کر خوب عیاشی ماریں؟

اپنے بچوں کو بھی بنکوں کا قرضہ اور سود خور بنا کر کرپشن کے قطب مینار تعمیر کر لیں۔

میں نے اسے جواب دیا کہ دیکھیں جہادیوں کے لئے ’’سیاسی دھارے‘‘ کی اصطلاح نئی نئی متعارف ہوئی ہے اس لئے مجھے اس کی تفصیلات کا ابھی تک مکمل طور پر علم نہیں ہے، ممکن ہے کہ حکومت اور بے دین غیر ریاستی عناصر کو یہ غلط فہمی ہو کہ’’جہادی‘‘ بے چارے چونکہ ہر وقت پہاڑوں، جنگلوں اور چٹانوں پر رہتے ہیں اس لئے انہیں شادیوں کا موقع نہیںملتا، لہٰذا انہیں واپس بلا کر ان کی شادیاں کروا دینی چاہئیں

یہ بھی ممکن ہے کہ وہ چاہ رہے ہوں کہ لوٹ مار، کرپشن، قومی خزانے کو چونا لگانے کا حق صرف حکومت یاسیاست دانوں کا ہی نہیں بلکہ’’جہادیوں‘‘ کو بھی ان کاحصہ بقدر جُثہ ادا کر دیا جائے تو مضائقہ ہی کیاہے؟ اس سے ایک تیر سے دو شکار ہو جائیں گے، یعنی’’جہادی‘‘ بھی ’’سیاسی‘‘ اور’’سیاسی‘‘ بھی’’جہادی‘‘ یعنی یہ ایک دوسرے میں ایسے گڈمڈ ہو جائیں گے کہ دونوں کی اصلی شناخت ہی کھو جائے گی۔۔۔

پھر’’جہادی‘‘ ایم این اے اور ایم پی اے کا الیکشن بھی لڑ سکیں گے ، کونسلر اور یونین کونسل کے چیئر مین بھی بن سکیں گے۔۔۔ بلکہ وزیر اور مشیر بھی بن سکیں گے۔۔۔ پھر’’جہادی‘‘ جن علاقوں کا رخ کریں گے وہاں کا ایس ایچ او ایڑیاں بجا کر انہیں سیلوٹ کرے گا۔۔۔ الیکشن میں کامیابی حاصل کر کے ایم این اے یا وفاقی وزیر کے مشورے سے سی ٹی ڈی کے اہلکار بھرتی ہوں گے

 میری باتیں سن کرپرانے’’جہادی‘‘ کے ماتھے پر سلوٹیں ابھرناشروع ہو گئیں اور وہ سخت افسوس زدہ لہجے میں بولا: مطلب یہ کہ پھر جہادی بھی مکمل سیاسی ہو جائیں گے؟ لگ تو ایسا ہی رہا ہے؟میں نے نیم دِلی سے جواب دیا، اچھا پھر بتائیے کہ بھلا کس کس جہادی کے نام کا قرعہ چار، چار شادیوں کیلئے نکلے گا؟ اور کون کون سا جہادی الیکشن میں حصہ لے گا؟

بھلا میں کیسے بتا سکتا ہوں؟میں نے کہا

 وہ بولا :کیا آپ کالم نگار اور تجزیہ نگار نہیں ہیں؟

وہ تو ہوں۔۔۔ مگر کاہن یا نجومی نہیں ہوں اور نہ ہی شیخ رشید، اور سائیں وسان کی طرح ہوں کہ جو خوامخواہ ’’جہادیوں‘‘کے حوالے سے اونگیاں بونگیاں مارتا پھروں

اچانک پرانا ’’جہادی‘‘ غصیلے لہجے میں بولا کہ ہاشمی صاحب! کرپشن کے ان قطب میناروں اور مودی کے ان یاروں کو بتا دیں کہ’’جہاد‘‘ سے بڑھ کر نہ کوئی دھارا ہو سکتا ہے اور نہ ہی ہے،’’جہاد‘‘ تو وہ عظیم دھارا ہے کہ جو کشمیر کے مجاہدین کو براہ راست بدر کے مجاہدین کے ساتھ جوڑدیتا ہے

جہادکے ذریعے مشرق و مغرب، شمال و جنوب کے مظلوم مسلمانوں کونہ صرف تحفظ فراہم کیا جا سکتا ہے۔۔۔ بلکہ مذہب اسلام کو بھی غلبہ دِلایا جا سکتا ہے، جہاد ہی وہ راستہ ہے کہ جس کے ذریعے کشمیر کو آزادی دلائی جا سکتی ہے۔۔۔

جہاد کے حوالے سے اس پرانے جہادی کی یہ جذباتی گفتگو سن کر مجھے خدشہ لاحق ہوا کہ کہیں مجھ پر بھی’’شدت پسندی‘‘ کا الزام نہ لگ جائے، میں نے آگے بڑھ کر اس کے منہ پر جیسے ہی ہاتھ رکھنے کی کوشش کی، میرے آگے بڑھتے ہی وہ جہادی پیچھے ہٹا۔۔۔ اور پھر میری آنکھ کھل گئی۔۔۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor