Bismillah

694


۱۰رمضان المبارک۱۴۴۰ھ

مولانا مسعود ازہر اور ملعون تکفیری بلاگرز (قلم تلوار۔نوید مسعود ہاشمی)

Qalam Talwar 577 - Naveed Masood Hashmi - Maulana Masood Azahar Aur

مولانا مسعود ازہر اور ملعون تکفیری بلاگرز

قلم تلوار...قاری نوید مسعود ہاشمی (شمارہ 577)

جہنم مکانی نریندر مودی کے بھارت نے چین پر جیش محمدﷺ کے مرکزی امیر مولانا محمد مسعود ازہر کو دہشت گرد قرار دلوانے کے حوالے سے دوھرے معیار کا الزام لگایا تو چینی وزارت خارجہ کے ترجمان’’ کینگ شوانگ‘‘ نے بھارتی الزامات کو سختی سے مسترد کرتے ہوئے کہا کہ’’چین پر مولانا محمد مسعود ازہر کے معاملہ پر دوہرے معیار کا الزام درست نہیں۔۔۔ کیونکہ چین اس معاملہ پر اصولوں اور شواہد کی بنیاد پر ایک مؤقف اپنا چکا ہے‘‘

مولانا محمد مسعود ازہر کے معاملے پر چین کا بھارت کو کرارا جواب ایک دفعہ تو بھارت کو شرمندہ کر گیا۔۔۔ مگر بھارت چونکہ شرمناک حد تک ڈھیٹ بھی ہے۔۔۔ اس لئے مجھے یقین ہے کہ سو جوتے اور سو پیاز کھانے کے باوجود۔۔۔ وہ ایک دفعہ پھر مولانامحمد مسعود ازہر کے خلاف نئے سرے سے’’غرّانا‘‘ اور ’’بھونکنا‘‘ شروع کر دے گا۔۔۔

بھارت کے حکمران انڈیا اور پاکستان میں رہنے والے تمام مذاہب سے وابستہ کروڑوں انسانوں کی زندگیوں کے لئے خطرہ بن چکے ہیں۔۔۔ اس سے زیادہ خوشخبری کی بات کیا ہو سکتی ہے کہ کروڑ ہا انسانوں کی زندگیوں کیلئے خطرہ بننے والے بھارتی حکمران بھی کسی سے خوفزدہ رہتے ہیں۔۔۔ مولانا محمد مسعودازہر کا خوف ان کی رگ وپے میں سرایت کر چکا ہے،’’دھوتیاں‘‘ گیلی ہونا تو پرانی بات ہو گئی۔۔۔ اب تو اندھیری راتوں کی پیداوار،دہشت گرد ہندو، امریکہ، برطانیہ، فرانس اور نہ جانے کس کس سے مولانا محمد مسعود ازہر کے خلاف مدد طلب کر رہے ہیں۔۔۔’’المدد یا امریکہ‘‘، المدد یا برطانیہ‘‘، المدد یا اسرائیل‘‘، اور ’’المدد یا اقوام متحدہ‘‘ کی دہائیاں دیتی ’’مودی اینڈ کمپنی‘‘۔۔۔کو چلو بھر پانی میں ڈوب مرنا چاہئے۔۔۔ کیوں کہ مرد قلندر مولانا محمدمسعود ازہر کی جہادی یلغار کو روکنا ان کے ہزاروں خداؤں(بتوں) کے بس کی بات بھی نہیں رہی۔۔۔ ویسے مصدقہ ذرائع بتاتے ہیں کہ بھارت کے ہندو انچاس کروڑ’’بتوں‘‘ کی پوجا کرتے ہیں۔۔۔ اقوام متحدہ سے مدد مانگ کر’’نرنیدرمودی‘‘ نے اس بات کا اعتراف کرلیا کہ بھارتی’’بت‘‘ مٹی کی بے جان مورتیوں کے سوا کچھ نہیں۔۔۔بھارتی پنڈتوں کے جادو اورٹونے بھی ناکام ہو گئے، ’’جہاد‘‘ کی عبادت کی طاقت دیکھنا ہو تو بھارت کی مولانا محمد مسعود ازہر کیخلاف چیخ وپکار اورواویلا دیکھ لو، دہشتگرد نریندر مودی سے لیکر بدنام زمانہ اجیت دوول تک مولانا محمدمسعودازہر کی جہادی عبادت سے لرزہ براندام نظر آئیں گے،

حق والوں کی اصل پہچان یہی ہے کہ وہ اپنوں کے لئے نرم اور کافروں کے خلاف’’اشداء علی الکفار‘‘ کی عملی تفسیر ہوتے ہیں۔۔۔ میرے الشیخ مولانا محمد مسعود ازہر اس حوالے سے خوش نصیب ہیں کہ مشرکوں اور کافروں کے نریندر مودی، اجیت دیول، جیسے موذی لیڈران بھی ان سے اتنے خوفزدہ ہیں کہ وہ ساری دنیا کے کافر اورمنافق حکمرانوں سے ’’مولانا‘‘ کے خلاف مدد طلب کر رہے ہیں۔۔۔ اللہ پاک مولانا محمد مسعودازہر کی حفاظت فرمائے(آمین)

اب آتے ہیں دوسرے موضوع کی طرف

 5سیکولر’’بلاگرز‘‘ غائب ہوئے تو پتہ چلا کہ یہ تو وہ لعنتی شیطان ہیں کہ جو سوشل میڈیا کے ذریعے نہ صرف توہین قرآن، توہین صحابہؓ،توہین ازواج مطہراتؓ اور توہین رسالتؐ کا ارتکاب کر رہے تھے۔۔۔ بلکہ پاک فوج و دیگر ریاستی اداروں کے خلاف بھی کمپیئن چلا رہے تھے

سلمان حیدر نام کا گستاخ تکفیری بلاگر ’’بھینسا ‘‘ ۔۔ ’’روشنی‘‘ اور ’’موچی‘‘ کے نام سے اکاؤنٹس بنا کر کفریات کو عام کر رہا تھا

گستاخ سلمان حیدر فاطمہ جناح ویمن یونیورسٹی راولپنڈی میں لیکچرار بھی تھا۔۔۔ مزید یہ کہ یہ تکفیری بلاگر اپنے آپ کو دانش وار اور شاعر بھی کہلواتا تھا۔۔۔ شیطان صفت سلمان حیدر ایک ایسے تکفیری لبرل فاشسٹوں کے گروپ کو چلا رہا تھا کہ جو بڑے منظم اندازمیں۔۔۔ اپنی ذہنی شیطنت کو سوشل میڈیا کے ذریعے۔۔۔ پھیلا کر پاکستان کے97فیصد مسلمانوں کے جذبات کاخون کر رہے تھے۔۔۔ شیطان سلمان حیدر نے ’’بھینسا‘‘ کے نام سے بنائے گئے ٹویٹر اکاؤنٹ سے جو کفریہ اور گستاخانہ پوسٹیں کیں ہیں ان میں سے چند ایک میں نے پڑھی ہیں۔۔۔ راولپنڈی کی ایک ویمن یونیورسٹی کا لیکچرار اس قدر کمینہ، گھٹیا، بے غیرت، دجال اور ولد الحرام ہو سکتا ہے یہ تو کبھی کسی پاکستانی نے سوچا بھی نہ ہوگا

یہ گستاخ رسول راولپنڈی کی مسلمان طالبات کو کیا پڑھاتارہا ہوگا؟ یہ سوچ کر ہی جسم پر لرزہ طاری ہو جاتا ہے

سیکولر اور لبرل فاشسٹ توہین رسالت، توہین صحابہؓ اور توہین قرآن میںاس قدر آگے بڑھ گئے کہ انہوں نے۔۔۔ملعون سلمان رشدی کوبھی۔۔۔ اس گندگی میں پیچھے چھوڑ دیا، مزید ستم یہ کہ۔۔۔پرویز ھود بھائی، فرزانہ باری،اوراس قماش کے دیگر مٹھی بھر لبرل فاشسٹوں نے ملعون سلمان حیدر،اور اس کے چارگستاخ ساتھیوں کے حق میں مظاہرے شروع کردیئے۔۔۔ گمشدہ گستاخان رسول کی حمایت میںمٹھی بھر لبرل فاشسٹوں کے مظاہروں کی وجہ سے۔۔۔ مسلمانوںمیں اشتعال پھیلنا ایک فطری امر تھا

ایسے ہی ایک مظاہرے میں تقریر کرتے ہوئے امریکی اوربھارتی پٹاری کے خرکار پرویز ہود بھائی نے ۔۔۔ چودہ سو سال پہلے کے دور کی تضحیک کر کے امت مسلمہ کے دلوں کو مجروح کر ڈالا

ملعون سلمان حیدر اوراس کے مٹھی بھرشیطانی گروہ کی جڑیں کہاںپر واقع ہیں؟ اس کا اندازہ امریکا اور برطانیہ کو لاحق تشویش سے بھی لگایا جاسکتا ہے، امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان مارک ٹونر،اسلام آبادمیں متعین برطانوی ہائی کمیشن اوراسلام آباد میں ہالینڈ کے سفیر نے اپنے علیحدہ علیحدہ بیانات میں ملعون سلمان حیدر اوردیگر چار ملعون تکفیری بلاگرز کی گمشدگی پر شدید ترین تحفظات کااظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میں انسانی حقوق کے کارکنوں کے غائب ہونے پر سخت تشویش ہے، اورحکومت پر زوردیا ہے کہ۔۔۔ ان کی بحفاظت واپسی یقینی بنائی جائے

پاکستان کے 19کروڑ مسلمان پوچھتے ہیں کہ ملعون سلمان حیدر اپنے دیگر’’تکفیری‘‘ بلاگرز کے ساتھ مل کر سوشل میڈیا کے ذریعے۔۔۔ ریاستی اداروںاور خاتم الانبیائﷺ کی شان میں جو گستاخیاں کر رہا تھا۔۔۔ کیا ان تکفیری ملعونوں کی سرپرستی، امریکہ، برطانیہ اور ہالینڈ کی طرف سے کی جارہی تھی؟

نائن الیون کے بعدپاکستان سے ہزاروں مذہبی نوجوان لاپتہ ہوئے مگر۔۔۔ امریکہ ہو یا کوئی اور ملک۔۔۔ کسی نے ان کے حق میں ایک لفظ کبھی نہیں بولا، بلکہ خود امریکہ پاکستانی ڈکٹیٹر سے ڈالروں کے عوض جیتے جاگتے انسانوں کوخرید کر ان پر بے پناہ ظلم ڈھاتا رہا۔۔۔ امریکہ نے پاکستان کی پاکباز بیٹی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو کراچی سے اغواء کر کے۔۔ کئی سال تک لاپتہ رکھا، اورپھراس کمزور اور نہتی بیٹی کو جھوٹے مقدمے میں86سال کی سزاسنا کر امریکہ میں قید کررکھا ہے

عراق،افغانستان سے لیکر پاکستان تک ہزاروں مرد وخواتین کو اغواء کر کے لاپتہ کرنے والے امریکہ و برطانیہ کو یہ حق کس نے دیا کہ وہ ملعون سلمان حیدر جیسے گستاخ رسول کو انسانی حقوق کے رکن ہونے کا سرٹیفیکیٹ دیں؟ کوئی گستاخ رسول انسانی حقوق کا کارکن ہوہی نہیںسکتا۔۔۔ اور پھر ان گستاخوں نے انسانی حقوق کے حوالے سے پاکستان میں تو کبھی کوئی کام نہیںکیا۔۔۔ انسانیت کے عظیم ترین محسن محمد کریمﷺ کیخلاف سوشل میڈیا پر مغلظات۔۔۔ پوسٹ کرنا۔۔۔ کیا ’’انسانی حقوق‘‘ اس کا نام ہے؟

ملعون لبرل فاشسٹوں کی گمشدگی کے بعد میڈیا بالخصوص ٹی وی چینلز کے بعض اینکرز اور اینکرنیوں نے گستاخ رسول سلمان حیدر اور اس کے دیگر 4ملعون ساتھیوں کی حمایت کرنے کی کوشش کی، جانتے بوجھتے ہوئے گستاخان رسول کی حمایت کرنے والے۔۔۔ اللہ کے غضب کو دعوت دینے کے ساتھ کروڑوںمسلمانوں کے جذبات کو بھی مجروح کر رہے ہیں، ان گستاخان رسول کو نمونہ عبرت بنانے کیلئے ضروری ہے کہ انہیں انصاف کے کٹہرے میںکھڑا کیاجائے۔

٭…٭…٭

رنگین صفحات کے مضامین

  • رنگ و نور ۔ سعدی کے قلم سے
  • Rangonoor English
  • Message Corner
  • رنگ و نور پشتو ترجمہ
  • کلمۂ حق ۔ مولانا محمد منصور احمد
  • السلام علیکم ۔ طلحہ السیف
  • قلم تلوار ۔ نوید مسعود ہاشمی
  • نقش جمال ۔ مدثر جمال تونسوی
  • سوچتا رہ گیا ۔ نورانی کے قلم سے

Alqalam Latest Epaper

Alqalam Latest Newspaper

Rangonoor Web Designing Copyrights Khabarnama Rangonoor